site
stats
سائنس اور ٹیکنالوجی

فرانس میں دنیا کی پہلی سولر ہائی وے کا افتتاح

پیرس: فرانس میں دنیا کی پہلی سولر ہائی وے کا افتتاح کردیا گیا۔ اس سڑک کو شمسی توانائی کے پینلز سے بنایا گیا ہے جو سڑک کنارے لگی لائٹس کو روشنی فراہم کریں گے۔

فرانس کے ایک چھوٹے سے قصبے میں بنائی جانے والی اس سڑک کا نام ’واٹ وے‘ رکھا گیا ہے۔ ایک کلومیٹر کے فاصلے پر محیط اس سڑک کا افتتاح فرانس کی وزیر ماحولیات سیگولین رائل نے کیا۔

انہوں نے ملک کے مختلف حصوں میں اسی طرز کی سڑکیں تعمیر کرنے کے 4 سالہ منصوبے کا بھی اعلان کیا۔

solar-2

شمسی توانائی کے پینلز سے سڑکیں بنانے کا خیال جرمنی، نیدر لینڈز اور امریکا میں بھی زیر غور ہے جو نہ صرف سڑکوں کے انفراسٹرکچر کو بہتر بنائیں گی بلکہ علاقے کی توانائی کی ضروریات کو بھی پورا کرنے میں مددگار ثابت ہوں گی۔

فرانسیسی ماہرین کا کہنا ہے کہ اس طرح کی سڑکوں کی تعمیر سے فرانس توانائی کے شعبہ میں خود کفیل ہوسکتا ہے اور اس مد میں خرچ کیا جانے والا کثیر زر مبادلہ بھی بچا سکتا ہے۔

فی الحال دیکھا جارہا ہے کہ یہ سڑک کتنے عرصے تک مختلف موسموں اور حالات کا مقابلہ کرسکتی ہے اور بھاری بھرکم ٹرکوں کے گزرنے کی صورت میں کتنے عرصے تک صحیح سالم رہ سکتی ہے۔

solar-3

ماہرین کا کہنا ہے کہ اس منصوبے میں صرف ایک خامی ہے کہ ان شمسی پینلز کی افادیت اس وقت بڑھ جاتی ہے جب انہیں سورج کے رخ پر براہ راست ترچھا کر کے نصب کیا جائے۔ سڑک پر بالکل سیدھا نصب کرنے کی صورت میں یہ سورج سے کم توانائی حاصل کرتے ہیں۔

سڑکوں پر سورج سے توانائی حاصل کرنے والے ذرائع استعمال کرنے کا خیال کافی پرانا ہے۔

poland-6

اس سے قبل پولینڈ میں بھی سڑک پر ’لومینوفور‘ نامی مادہ بچھایا گیا تھا جو دن بھر سورج کی روشنی کو اپنے اندر جذب کرتا ہے اور اندھیرا ہوتے ہی جگمگا اٹھتا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top