The news is by your side.

سندھ کے تعلیمی اداروں میں‌ پہلے تھیم بیسڈ ’چلڈرن ویک‘ کا انعقاد، ہزاروں بچے شریک

کراچی: سندھ کے تعلیمی اداروں میں‌ پہلے تھیم بیسڈ ’چلڈرن ویک‘ کا انعقاد کیا گیا، اختتامی تقریب میں 20 ہزار سے زیادہ بچوں نے شرکت کی۔

تفصیلات کے مطابق سندھ کے تعلیمی اداروں میں منائے گئے چلڈرنز ویک کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کمشنر کراچی محمد اقبال میمن نے کہا کہ بچوں کا عالمی دن بچوں کے حقوق کی ضمانت دیتا ہے، والدین ہراسمنٹ اور ڈرگز کے استعمال پر کڑی نظر رکھیں۔

انھوں نے کہا تعلیمی ادارے، والدین اور انتظامی ادارے مل کر بچوں کو محفوظ ماحول فراہم کرسکتے ہیں۔

ایڈیشنل ڈائریکٹر پرائیویٹ انسٹیٹیوشنز حکومت سندھ رفیعہ جاوید نے کہا کہ بچے فیوچر سٹیزنز ہیں، دنیا میں تبدیلی اور ترقی ان کے ذریعے ہی ممکن ہے، آج ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم حساس اور سنگین مسائل پر کھل کر بات کریں۔ انھوں نے کہا پہلا تھیم بیسڈ چلڈرن ویک سندھ کے تعلیمی اداروں میں بھرپور انداز میں منعقد ہوا۔

ڈاکٹر نصرت پروین سہتو نے کہا کہ بچوں کو زیادہ سے زیادہ خوش رکھ کر ان کی بہترین نشوونما کی جا سکتی ہے، حیدرعلی نے شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہم سب مل کر بچوں کو مستقبل کے بہترین شہری تیار کر سکتے ہیں، بچوں کی ذہنی قابلیت کے ساتھ جذباتی اور معاشرتی نشوونما بھی ضروری ہے۔

واضح رہے کہ صوبائی وزیر تعلیم سندھ سید سردار علی شاہ کی ہدایات پر ڈائریکٹوریٹ پرائیویٹ انسٹیٹیوشنز سندھ اور آل سندھ پرائیویٹ اسکولز اینڈ کالجز ایسوسی ایشن کے اشتراک سے بچوں کے عالمی دن کے حوالے سے پہلے تاریخی ’چلڈرن ویک‘ کا 14 نومبر تا 19 نومبر انعقاد کیا گیا۔

چلڈرن ویک میں بچوں کی بُلنگ، جسمانی سزا، ہراسمنٹ، ڈرگز کے استعمال، والدین کی اہمیت اور فیوچر سٹیزنز کے لازمی تقاضے، جیسے عنوانات پر مختلف پینل ڈسکشنز اور سرگرمیوں پر مشتمل پروگرامز منعقد کیے گئے۔

آخری روز 20 ہزار سے زیادہ بچوں اور 4 ہزار سے زیادہ اساتذہ کے لیے پی اے ایف میوزیم کراچی میں گرینڈ کارنیوال منعقد کیا گیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں