The news is by your side.

Advertisement

پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار خواجہ سراؤں کے لیے اسکول قائم

لاہور: پنجاب کے شہر فیصل آباد میں پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار خواجہ سراؤں کو مفت تعلیم فراہم کرنے کے لیے اسکول قائم کر دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق فیصل آباد کے علاقے ڈھنڈی والا میں خواجہ سراؤں کے لیے اسکول قائم کیا گیا ہے جہاں ابتدائی طور پر چالیس خواجہ سراؤں نے داخلہ لیا، جنہیں مفت تعلیم کے ساتھ ساتھ دو ہزار روپے وظیفہ بھی فراہم کیا جائے گا۔

پروجیکٹ کی ڈائریکٹر سعدیہ نورین نے کہا ہے کہ تعلیم کی اہمیت اور خواجہ سراؤں کو معاشرے میں مقام دینے کے لیے اسکولنگ سلسلے کا آغاز کیا ہے، اسکول میں زیر تعلیم خواجہ سراؤں کو دو سال میں میٹرک کروایا جائے گا، ادارے میں چالیس خواجہ سراؤں نے داخلہ لیا ہے جنہیں ماہانہ دو ہزار روپے وظیفہ بھی ملے گا۔

پاکستان میں پہلی بار خواجہ سرا نیوزکاسٹر متعارف

انہوں نے کہا کہ خواجہ سراؤں کو ٹیوٹا سے فنی کورس کروائے جائیں گے اور ایف اے پاس دو خواجہ سراؤں کو مختلف اداروں میں ملازمت دلائی گئی، جہاں وہ بہتر روزگار کے ساتھ ساتھ عزت کی زندگی گزار سکیں گے۔

پاکستان میں پہلی بار خواجہ سراؤں کے لیے ڈرائیونگ لائسنس کا اجرا

سعدیہ نورین کا مزید کہنا تھا کہ فیصل آباد کے علاقے ڈھنڈی والا میں جو اسکول قائم کیا گیا ہے اس کا نام ’خواجہ سرا پیلس نان فارمل ہائی اسکول‘ ہے جس کی افتتاحی تقریب جلد منعقد کی جائے گی جبکہ دوسری جانب انجمن تاجران سٹی کی جانب سے خواجہ سراؤن کے لیے ہوسٹل تعمیر کروایا جائے گا۔

خیال رہے کہ انجمن تاجران سٹی کی جانب سے اسکول میں اچھی کارکردگی دکھانے والے خواجہ سراؤں میں انعامات بھی تقسیم کیے جائیں گے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیاپر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں