site
stats
بزنس

پاک چین اقتصادی راہداری کے تحت تجارتی سرگرمیوں کا آغاز

گوادر : پاک چین اقتصادی راہداری کے تحت تجارتی سرگرمیوں کا آغاز ہوگیا ہے ، چین سے کنٹینرز کا قافلہ گوادر کی جانب گامزن ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاک چین اقتصادی راہداری کے تحت گزشتہ روز پہلا تجارتی قافلہ چین سے پاکستان پہنچا، ہنزہ کے گاؤں کے سوست میں مختلف سامان سے لدے ہوئے لگ بھگ سو کنٹینرز پہنچے۔

افتتاحی تقریب کا انقعاد سوست پورٹ پر ہوا، سوست کراکرم ہائی وے میں پاکستان کا آخری قصبہ ہے، کسٹم کلیئرنس کے بعد پینتالیس کنٹینرز کو گوادر پورٹ کیلئے روانہ کر دیا گیا جبکہ بقیہ کنٹینرز کو آج روانہ کیا جائے گا۔

افتتاحی تقریب میں چینی حکام کے ساتھ ساتھ گلگت بلتستان کے وزیراعلیٰ حفیظ الرحمٰن اور فورس کمانڈر ثاقب محمود ملک نے بھی شرکت کی۔

وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حفیظ الرحمٰن کا کہنا تھا کہ حکومت نے گلگت بلتستان کیلئے باہتر ارب روپے کے ترقیاتی منصوبوں کا اعلان کیا، جس سے علاقے میں ٹیکنولوجیکل بہتری آئے گی۔

حفیظ الرحمٰن کا کہنا تھا کہ یہ چینی اور پاکستانی عوام کے لیے انتہائی اہم دن ہے کہ سی پیک کے تحت تجارتی سرگرمیوں کا باضابطہ طور پر آغاز ہوگیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ سی پیک منصوبہ گلگت بلتستان کی قسمت بدل دے گا، ہر ہفتے قراقرم ہائی وے کے ذریعے ایک ہزار چینی کنٹینرز گلگت بلتستان سے گزریں گے۔


مزید پڑھیں : پاک چین اقتصادی راہداری کے منصوبے پر پیشرفت کا آغاز


خیال رہے کہ رواں سال اگست میں  گوادر پورٹ اتھارٹی کے چیئرمین دوستین جمالدینی کا کہنا تھا کہ پاک چین اقتصادی راہداری کے منصوبے پر پیشرفت کا آغاز ہوگیا ہے، اگلے چند ماہ کے دوران گوادر میں تین بڑے منصوبوں پر کام شروع ہوجائے گا۔

چیئرمین دوستین جمالدینی کا کہنا تھا کہ مشرقی ساحل کے ساتھ ایکسپریس وے کے منصوبے کے فنڈز مختص کر دیئے گئے ہیں اور اکتوبر تک ایکسپریس وے سمیت بین الاقوامی ہوائی اڈے کی تعمیر پر کام شروع ہو جائے گا، گوادر میں فری ٹریڈ زون کے قیام کے سلسلے میں بھی زمین حاصل کرلی گئی ہے، اسکی مارکیٹنگ بھی اسی سال شروع کردی جائےگی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top