The news is by your side.

Advertisement

امریکی بحریہ میں پہلی بار خاتون طیارہ بردار جہاز کی کمانڈر تعینات

نیو یارک : امریکی بحریہ میں پہلی بار کسی خاتون کو طیارہ بردار جہاز کی کمانڈر تعینات کردیا گیا، کیپٹن ایمی باؤرنشمٹ اس سے قبل یو ایس ایس ابرہام لنکن پر ایگزیکٹو آفیسر کے فرائض انجام دے چکی ہیں۔

تاریخ میں پہلی بار امریکی بحریہ نے ایٹمی طاقت سے چلنے والے طیارہ بردار جہاز کی کمان کے لئے ایک خاتون کا انتخاب کیا ہے، کیپٹن ایمی باؤرنشمٹ امریکی بحریہ کے کسی طیارہ بردار جہاز کی کمانڈ کرنے والی پہلی خاتون ہوں گی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق نیول ایئر فورس نے بتایا ہے کہ کیپٹن ایمی باؤرنشمٹ مالی سال 2022 میں ایک کیریئر کمانڈنگ آفیسر بن جائیں گی تاہم یہ واضح نہیں ہے کہ وہ کس کیریئر کی قیادت کریں گی۔

امریکہ میں کیپٹن ایمی باؤرنشمٹ نے کسی طیارہ بردار جہاز کی ایگزیکٹو آفیسر کے طور پر منتخب ہونے والی پہلی خاتون بن کر تاریخ رقم کی ہے۔

واضح رہے کہ سال2016ء میں باؤرنشمٹ کو پہلی ایسی خاتون کا اعزاز حاصل ہوا جس نے یو ایس ایس ابرہام لنکن پر ایگزیکٹو افسر کی حیثیت سے خدمات انجام دیں۔

باؤرنشمٹ نے 1994ء میں امریکی بحریہ کی اکیڈمی سے گریجویشن کی۔ یہ وہی سال ہے جب جنگی طیاروں اور بحری جہازوں پر عورتوں نے جنگی خدمات انجام دینا شروع کیں۔

انہیں بحریہ کے طیاروں کو تین ہزار سے زائد گھنٹے اڑانے کا تجربہ ہے، وہ “ڈیفنس میریٹوریس سروس میڈل”اور نیوی اور میرین کور کے “اچیومنٹ میڈل”سمیت کئی ایک فوجی ایوارڈ حاصل کرچکی ہیں۔

باؤرنشمٹ کا شمار بحریہ کے ان چھ کپتانوں میں ہوتا ہے جن کی “ایوی ایشن میجر کمانڈ بورڈ”نے مالی سال 2022 میں طیارہ بردار جہازوں کی کمانڈ کرنے کی سفارش کی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں