site
stats
بزنس

مالیاتی خسارہ 4سال کی بلند ترین سطح پر

اسلام آباد : جولائی تا دسمبر مالیاتی خسارہ چار سال کی بلند ترین سطح پر آگیا، رواں مالی سال کے پہلے چھ ماہ میں مالیاتی خسارے کا حجم سات سو ننانوے ارب روپے ہو گیا۔

معیشت میں سدھار کے دعوے سب کھوکھلے ثابت ہوئے، رواں مالی سال کے پہلے چھ ماہ میں مالیاتی خسارے کا حجم دو اعشاریہ چار فیصد ہوگیا، گزشتہ مالی سال کے اسی عرصے میں مالیاتی خسارے کاحجم مجموعی قومی آمدن کا ایک اعشاریہ سات فیصد تھا۔

حکومت نے رواں مالی سال کیلئے مالیاتی خسارے کو تین اعشاریہ آٹھ فیصد تک محدود کر نے کا ہدف مقرر کیا ہے، مالیاتی خسارے میں اضافے کی وجہ محصولات وصولی میں کمی اور اخراجات میں اضافہ ہے۔

معاشی تجزیہ کاروں کے مطابق آئی ایم ایف پروگرام کی کڑی شرائط ختم ہونے کے بعد حکومتی اخراجات میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

رواں مالی سال کے پہلے چھ ماہ میں اخرا جات کا حجم اٹھائیس کھرب روپے رہا جو کہ گزشتہ مالی سال میں پچیس کھرب روپے تھا۔


مزید پڑھیں : مالیاتی خسارے میں 438 ارب روپے اضافہ


یاد رہے اس سے قبل  جولائی تا ستمبر کے دوران ملکی مالیاتی خسارے کا حجم 438 ارب روپے رہا جبکہ جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق جولائی تا ستمبر کے دوران ٹیکس وصولیوں میں بھی نمایاں کمی ریکارڈ کی گئی تھی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top