The news is by your side.

Advertisement

مچھلیوں کو بھی انسانوں کی طرح درد ہوتا ہے

یہ بات آپ کی سماعت سے کتنی بار ٹکرائی کہ مچھلیوں کو درد محسوس نہیں ہوتا، ایسے جملے وہ لوگ ادا کرتے ہیں جنہیں فشنگ کا شوق ہوتا ہے۔

کچھ لوگ ایسے ہیں جنہوں نے وقت گزاری کے لیے اپنا مشغلہ مچھلیاں پکڑنے کو بنایا ہوا ہے اور وہ یہ توجیح بھی پیش کرتے ہیں کہ دیگر جانوروں کا شکار کرنے کی طرح یہ بھی فطری عادت ہے۔

مگر اب ایک نئی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی کہ مچھلیوں کو درد محسوس نہ ہونے والی بات غلط ہے۔ فلاسفیکل ٹرانسیکشنز آف دی رائل سوسائٹی میں شائع ہونے والے نتائج بتاتے ہیں کہ چھوٹی بڑی تمام مچھلیوں کو بالکل ویسے ہی درد محسوس ہوتا ہے جیسے انسانوں کو ہوتا ہے۔

مطالعے میں مچھلیاں پکڑنے اور اُن کے کانٹے مین پھنسنے کے دورانیے کو نوٹ کیا گیا علاوہ ازیں جال میں پھنسنے والی مچھلیوں کے ردعمل کو بھی نوٹ کیا گیا۔

مزید پڑھیں: مچھیروں نے مہنگی ترین مچھلی پکڑ کر چھوڑ دی

مطالعے کے دوران سنہری مچھلی کے شکار اور اُسے کرنٹ لگا کر پکڑنے کے عمل کا بھی مشاہدہ کیا گیا جس میں یہ بات سامنے آئی کہ مچھلیاں پھنسنے یا مرنے سے قبل ایسے ہی درد اور کیفیت محسوس کرتی ہیں جیسے انسان حادثے کے وقت کرتے۔

ماہرین نے جال یا کانٹے میں پھنسنے والی مچھلیوں کو زندہ حالت میں دافع درد کی ادویات بھی دیں جس کے بعد اُن کی حالت بہتر ہوئی۔ تحقیقاتی ٹیم کی سربراہ سنیڈانس کہتی ہیں کہ ہم شکار کرنے کے عمل سے خبردار رہنا چاہیے، کیونکہ جب ہمیں درد محسوس ہوتا ہے تو ہم اُن کے ساتھ ایسا کیوں کریں۔

اُن کا کہنا تھا کہ مچھلیوں کی جلد انسانوں سے زیادہ نازک ہوتی ہے، انہیں قتل کرکے نقصان نہ پہنچائیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں