The news is by your side.

Advertisement

پانچ کرپٹ عہدیداروں‌ کو5 برس قید، 37 کروڑ جرمانہ

ریاض : پراسیکیوٹری جنرل نے کرپشن میں ملوث ملزمان کے خلاف 300 شواہد جمع کیے جس کے بعد ان کے خلاف فیصلہ دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کی ایک عدالت نے مالی اور انتظامی بدعنوانی میں ملوث پانچ عہدیداروں کو قومی وسائل برباد کرنے، اختیارات کے ناجائز استعمال، قومی املاک میں غیر قانونی تصرف، سرکاری ملازمتوں کی خرید و فروخت اور دیگر غیر قانونی اقدامات پر 32 سال قید اور 90 لاکھ ریال کے برابر جرمانہ کی سزا سنادی۔

پراسیکیوٹری جنرل نے کرپشن میں ملوث ملزمان کے خلاف 300 شواہد جمع کیے جس کے بعد ان کے خلاف فرد جرم عاید کی گئی ہے، ملزمان کو 32 سال قید اور بھاری جرمانہ کی سزا سنائی گئی ہے۔

پراسیکیوٹر جنرل کا کہنا تھا کہ بدعنوانی کے الزامات کے تحت سزا پانے والوں پر رشوت وصول کرنے، جعل سازی، دھوکہ دہی، اپنے سرکاری عہدوں اور مناصب کا ناجائز استعمال کرنے، ملازمتوں کے لیے لین دین کرنے کے الزامات عاید کیے گئے ہیں۔

اس کیس کے مرکزی ملزم کو 12 سال قید اور ایک ملین ریال سے زاید کی رقم بہ طور جرمانہ جمع کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں