The news is by your side.

Advertisement

پولینڈ: انتہائی مقبول گیم اسکیپ روم نے پانچ نا بالغ لڑکیوں کی جان لے لی

وارسا: پولینڈ میں انتہائی مقبول گیم اسکیپ روم نے پانچ نا بالغ لڑکیوں کی جان لے لی، آتشزدگی سے پچیس سالہ نوجوان بھی جھلس کر شدید زخمی ہوگیا۔

تفیصلات کے مطابق انتہائی خطرناک اسکیپ روم نامی گیم جسے بظاہر تو انسان کھیلتا ہے لیکن بدقسمتی سے یہ گیم انسانی جانوں سے کھیلتی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق پولیس حکام کا کہنا ہے کہ آتشزدگی کا یہ واقعہ پولینڈ کے شہر کوزالین میں پچیس سالہ نوجوان کی سالگرہ کی تقریب میں پیش آیا، جہاں کم عمر لڑکیاں انتہائی پاپولر گیم اسکیپ روم کھیل رہی تھی کہ بند کمرے میں اچانک آگ لگنے سے جھلس کر ہلاک ہوگئیں۔

وزیرداخلہ نے میڈیا سے گفتگو میں ہلاکتوں کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ جھلس کر ہلاک ہونے والی لڑکیوں عمریں چودہ سے پندرہ برس کی تھی۔

اسکیپ روم گیم میں نوجوان لڑکے لڑکیا ں اپنے آپ کو کسی عمارت یہ روم بند کرکے باہر نکلنے کے طریقے ڈھونڈتے ہیں۔

بلیو وہیل گیم کے نام پر لڑکیوں کو ہراساں کرنے کا انکشاف

وزیرداخلہ نے اس گیم کو کھیلتے وقت حفاظتی انتظامات یقنی بنانے کے احکامات صادر کردیئے ہیں۔

خیال رہے کہ اس سے قبل بلیو وہیل نامی گیم نے بھی صارفین پر منفی اثرات مرتب کیے تھے۔

واضح رہے کہ بلیو وہیل گیم روس کے ایک نوجوان نے تیار کیا جسے حکومت نے ایک سال قید کی سزا دے رکھی ہے، اس گیم کے متاثرین برازیل، بلغاریہ، چلی، چین، جارجیا، بھارت، اٹلی، کینیا، پاکستان، پیراگوئے، پرتگال، روس، سعودی عرب، سربیا، اسپین، امریکا اور یوراگوئے میں سامنے آئے تھے۔

جہاں لوگوں نے خودکشیاں کرنے کی کوشش کی، کچھ کامیاب ہوگئے، متعدد افراد نے اپنے جسموں کو تیز دھار آلات سے کاٹا اور دیگر طرح کے خطرناک چیلنجز پورا کرنے کے دوران خود کو نقصان پہنچایا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں