site
stats
پاکستان

کراچی میں رینجرز کی کارروائی ‘ بچےسمیت پانچ دہشت گرد ہلاک

کراچی: شہرقائد کےعلاقےاردو بازار میں رینجرز کی کارروائی کےدوران بچے سمیت پانچ دہشت گرد مارے گئے۔

سندھ رینجزرکےترجمان کےمطابق رینجرز نے کالعدم جماعت کے دہشت گرد کی نشاندہی پر پیرکی شام 7 بجکر17منٹ پراردو بازار گلی نمبر 3 میں چھاپہ مار کارروائی کی۔

رینجرز کو دیکھتے ہی عمارت میں چھپے دہشت گردوں نے دستی بموں سے حملہ کردیا اور فائرنگ شروع کردی جس کی زد میں آکررینجرز کے 4 اہلکار زخمی بھی ہوئےجس کے بعد رینجرز نے فوراً عمارت کا محاصرہ کرلیا۔

ترجمان رینجرز کی جانب سے جاری بیان میں بتایاگیاہےکہ عمارت کا محاصرہ کرنے پرخاتو ن سمیت چار دہشت گردوں نے خود کو ایک کمرے میں محصور کرلیا۔

رینجرز اور دہشت گردوں کے درمیان7گھنٹوں تک فائرنگ کا تبادلہ ہواجو رات 2 بجکر 45 منٹ تک جاری رہا۔

ترجمان رینجرز کےمطابق تین دہشت گردوں نے خود کو دھماکے سے اڑالیا جبکہ 1دہشت گرد فرار ہونے کی کوشش میں رینجرز کی گولیوں کا نشانہ بنا۔

رینجرز کی جانب سے جاری بیان میں بتایاگیاہےکہ دھماکے کےنتیجے میں دہشت گردوں کےساتھ موجود پانچ سالہ بچہ بھی ہلاک ہوگیا جبکہ مکان سے گولیاں اور دستی بم برآمد ہوئے۔

ترجمان رینجرزکےمطابق مارے جانے والے ایک دہشت گرد کی شناخت محمد زاہد کےنام سے ہوئی ہےجبکہ دیگر کی تاحال شناخت نہ ہوسکی۔رینجرز کی جانب سے عمارت کو مکمل تلاشی لینے کےبعد کلیئرقراردے دیاگیاہے۔


دہشت گردوں کےزیراستعمال فلیٹ کا مالک گرفتار


دوسری جانب اردو بازار میں دہشت گردوں کے زیراستعمال فلیٹ کے مالک کو سیکورٹی ادارے نے محمودآباد سے گرفتارکرلیا ہے۔

سیکورٹی ادارے کی جانب سے گرفتار کیےجانے والے شخص نے چند ماہ قبل یہ فلیٹ خریدا تھا اور مارے جانے والے دہشت گرد چائے فروش کی مدد سے اس فلیٹ میں روپوش تھے۔

ذرائع کےمطابق دو سے ڈھائی ماہ قبل دہشت گرد اس فلیٹ میں منتقل ہوئےتھے،متعلقہ تھانے میں کرایہ داری ایکٹ کےتحت اندراج نہیں تھا۔

واضح رہے کہ کراچی میں چند روز قبل ہی رینجرز کو حاصل خصوصی اختیارات میں توسیع کی گئی ہے اور اس سلسلے میں گزشتہ روز ہی وفاقی وزارت داخلہ نے اختیارات میں مزید 90 روز کی توسیع کے حوالے سے نوٹیفکیشن جاری کیا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top