احتساب عدالت نے فلیگ شپ ریفرنس کی سماعت کل تک ملتوی کردی -
The news is by your side.

Advertisement

احتساب عدالت نے فلیگ شپ ریفرنس کی سماعت کل تک ملتوی کردی

اسلام آباد : احتساب عدالت میں سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف فلیگ شپ ریفرنس کی سماعت کل تک ملتوی ہوگئی۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف فلیگ شپ ریفرنس کی سماعت جج محمد ارشد ملک نے کی۔

تفتتیشی افسر کامران احمد کا بیان قلمبند کیا گیا جبکہ نوازشریف کی جانب سے معاون وکیل نے حاضری سے استثنیٰ کی درخواست دائر کی۔

درخواست میں کہا گیا کہ آج بیگم کلثوم نوازکے لیے دعا، قرآن خوانی ہے، نوازشریف نہیں آسکتے۔

حسن نوازکی آف شورکمپنیوں کی اسٹیٹمنٹ عدالت میں پیش کردی گئیں، تفتیشی افسر نے بتایا کہ آف شورکمپنیوں کا ریکارڈ کمپنیز ہاؤس لندن سے حاصل کیا گیا ہے۔

نیب کی جانب سے احتساب عدالت میں درخواست دائر کی گئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ ایک ایم ایل اے معصول ہوا ہے ریکارڈ کا حصہ بنایا جائے۔

معاون وکیل نے عدالت میں کہا کہ خواجہ حارث اس پردلائل دیں گے، یہ کوئی طریقہ نہیں تفتیشی افسر کے بیان کے دوران نئی درخواست آگئی۔

خواجہ حارث کے وکیل نے کہا کہ خواجہ حارث یہاں موجود بھی نہیں ہیں، نیب پراسیکیوٹرسردار مظفرعباسی نے کہا کہ آپ درخواست پربحث کرلیں یا پھراپنا وکالت نامہ واپس لے لیں۔

معاون وکیل محمد زبیر نے کہا کہ یہ طریقہ نہیں ہمیں وکالت نامے واپس لینے کا مشورہ دیتے ہیں، ہمیں کوئی پیشگی نوٹس نہیں دیا گیا۔

معزز جج نے معاون وکیل کو ہدایت کی کہ خواجہ حارث سے رابطہ کریں ان کوبلالیں، پہلے بیان جاری رکھیں درخواست بعد میں دیکھتے ہیں۔

احتساب عدالت میں گزشتہ روز سماعت کے دوران کامران احمد کا کہنا تھا کہ کمپنیز ہاؤس لندن میں حسن نواز کی کمپنیوں کے ریکارڈ کے لیے درخواست دی۔

تفتیشی افسر کا کہنا تھا کہ ریکارڈ کی فراہمی کے لیے ادا کی گئی فیس ضمنی ریفرنس کا حصہ ہے۔ کمپنیز ہاؤس میں حسن نواز کی 10 کمپنیوں کے ریکارڈ کے لیے درخواست دی۔

کامران احمد نے نواز شریف کے صاحبزادے حسن نواز کی کمپنیوں کی ملکیتی جائیداد کی تفصیلات پیش کرتے ہوئے کہا تھا کہ حسن نواز کی 18 کمپنیوں کے نام پر 17 فلیٹس اوردیگرپراپرٹیز ہیں۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے احتساب عدالت کو سابق وزیر اعظم نواز شریف کے خلاف العزیزیہ اسٹیل ملز اور فلیگ شپ ریفرنسز کا ٹرائل مکمل کرنے کے لیے 17 نومبر تک کی مہلت دے رکھی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں