The news is by your side.

Advertisement

راوی اور ستلج میں سیلابی ریلے کا خدشہ، پنجاب کے 7 اضلاع میں ڈاکٹرز کی ٹیمیں روانہ

لاہور: راوی اور ستلج میں سیلابی ریلے کے خدشے کے پیشِ نظر ڈی جی ہیلتھ آفس نے پنجاب کے 7 اضلاع میں ڈاکٹرز کی ٹیمیں روانہ کر دی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق آج بھارت نے دریائے ستلج میں بغیر اطلاع پانی چھوڑ دیا ہے جس کے نتیجے میں سیلاب کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے، ادھر راوی میں بھی سیلابی ریلے کا خدشہ ہے۔

پنجاب کے ہیلتھ آفس کی جانب سے صوبے کے سات اضلاع میں طبی ٹیمیں روانہ کی گئی ہیں، جن میں قصور، اوکاڑہ، پاکپتن، ویہاڑی، بہاولنگر، لودھراں اور بہاولپور کے اضلاع شامل ہیں۔

طبی ٹیمیں شہریوں کو وبائی امراض سے بچاؤ اور طبی امداد کی سہولیات فراہم کریں گی، یہ ٹیمیں 23 اگست تک اضلاع میں رہ کر سیلابی صورت حال میں کام کریں گی۔

یہ بھی پڑھیں:  بھارت نے دریائے ستلج میں پانی چھوڑ دیا، سیلاب کا خطرہ

ڈی جی ہیلتھ نے ٹیموں کو ہدایت کی ہے کہ مذکورہ اضلاع میں پیش آمدہ صورت حال کی تصویریں محکمے کو بھجوائی جائیں۔

واضح رہے کہ دریائے ستلج میں بھارتی پنجاب سے آنے والے ریلے سے سیلاب کا خطرہ ہے، این ڈی ایم اے نے اس سلسلے میں وارننگ بھی جاری کی ہے اور تمام متعلقہ اداروں کو ہائی الرٹ رہنے کی ہدایت کی گئی۔

رپورٹ کے مطابق پانی گنڈا سنگھ والا کے مقام پر پاکستان میں داخل ہوگا، ڈیڑھ سے 2 لاکھ کیوسک پانی پاکستانی حدود میں داخل ہوسکتا ہے، بھارت نے لداخ ڈیم کے 5 میں سے 3 اسپل ویز کھول دیے تھے، جس کے بعد پی ڈی ایم اے پنجاب کی جانب سے قصور اور دریائے سندھ کے اطراف انتظامیہ کو الرٹ کیا گیا۔

یاد رہے کہ بھارت کی جانب سے دریائے جہلم میں بھی پانی چھوڑا جا رہا ہے، مظفر آباد آزاد کشمیر کی انتظامیہ نے اس سلسلے میں الرٹ جاری کر دیا ہے، گزشتہ روز بھارت نے آبی دہشت گردی کرتے ہوئے دریائے چناب میں پانی چھوڑ دیا تھا، جس کے باعث دریائے چناب میں درمیانے درجے کا سیلاب آیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں