The news is by your side.

بھٹو کے شہر لاڑکانہ میں سیلاب متاثرین پھٹ پڑے

بھٹو کے شہر لاڑکانہ میں سیلاب متاثرین پھٹ پڑے، تباہ حال مظاہرین نے صوبائی وزرا پر امدادی سامان ہڑپ کرنے کا الزام عائد کردیا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان بھر میں سیلابی صورت حال کے باعث نشیبی علاقوں میں حالات انتہائی خراب ہوچکے تاہم صوبہ سندھ میں بد انتظامی اور اقرباپروری کے باعث سیلاب متاثرین پھٹ پڑے۔

اے آر وائی نیوز سے گفتگو میں سیلاب متاثرین نے صوبائی وزرا پر امداد ہڑپ کرنے کا الزام لگاتے ہوئے بتایا کہ ٹینٹ ، راشن اور دوائیں متاثرین کے بجائے ادھر ادھر کی جا رہی ہیں۔

علاقے میں صورت حال یہ ہے کہ ایک کلو آلو 500 سو روپے میں بھی نہیں مل رہے ہیں، اپنے بچوں کو کیا کھلائیں، صوبائی وزرا کی جانب سے صرف دکھاوا کیا جارہا ہے۔

بھٹو کے شہر لاڑکانہ میں دہائیاں دیتے متاثرین نے عمران خان زندہ باد کےنعرے بلند کرتے ہوئے کہا کہ اب عمران خان ہی ہماری امید ہے، آئندہ عمران کے علاوہ کسی اور کو ووٹ نہیں دینگے۔

ادھر ملک بھر میں سیلاب سے ہونے والی تباہی، ہلاکتوں اور مالی نقصانات کے حوالے سے نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے )نے تفصیلی اعدادو شمار جاری کردیئے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق اب تک مجموعی طور پر 935افراد جاں بحق جبکہ 1500کے قریب زخمی ہوچکے ہیں۔

این ڈی ایم اے کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران مزید 34 افراد جاں بحق ہو گئے جس میں 17 بچے، 10 مرد اور 7 خواتین شامل ہیں۔

این ڈی ایم اے کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں میں کے پی میں 16، سندھ میں 13، بلوچستان میں 4، پنجاب میں ایک شخص جاں بحق ہوا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں