The news is by your side.

Advertisement

اپوزیشن کو نہتے کشمیری اورپاکستانی عوام کی خواہشات کو دیکھنا چاہیے، وزیرخارجہ

اسلام آباد : وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ وزیراعظم اقوام متحدہ میں 27تاریخ کو پاکستان کامؤقف پیش کریں گے، پوری قوم سے گزارش ہے کہ ترجیحات پر توجہ دیں ، اپوزیشن کو نہتے کشمیری اور پاکستانی عوام کی خواہشات کو دیکھنا چاہیے۔

تفصیلات کے مطابق وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو جاری ہے، بھارتی جماعت کے مطابق ہزاروں افراد گرفتارہیں، ہیومن رائٹس کونسل نے پاکستان کے مؤقف کو تسلیم کیا۔

وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ ایک طرف ہم قوم کو یکجا کرنے کی کوشش کررہےہیں، دوسری طرف ہماری صفوں میں کچھ لوگ قوم کو تقسیم کررہے ہیں، آج پوری قوم کشمیریوں سے یکجہتی کا اظہار کررہےہیں، دنیا بھر میں مظلوم کشمیریوں سے یکجہتی کا مظاہرہ ہورہا ہے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا وزیراعظم اقوام متحدہ میں 27تاریخ کو پاکستان کا مؤقف پیش کریں گے، پوری قوم سے گزارش ہے کہ ترجیحات پر توجہ دیں ، فیصلہ کرنا ہوگا قومی ایجنڈے کو فوقیت دینی ہے یا ذاتی ایجنڈے کو۔

ان کا کہنا تھا کہ کشمیر پر پوری قوم اور حکومت کی سوچ ایک ہے ، پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بھی اسی سوچ کو آگے بڑھانے کیلئے بلایا تھا، ہمارا مقصد یہی تھا کہ حکومت اور اپوزیشن کو مسئلے پر اکٹھا کیا جائے۔

وزیرخارجہ نے مزید کہا کہ ذاتی مفادات سے پاکستان اور کشمیر کے ایجنڈےکو نقصان ہوگا، پرامن احتجاج کرنا ہر سیاسی جماعت کا حق ہے ، اس وقت دنیا کی توجہ ہمیں مسئلہ کشمیر کی طرف مبذول کرانی ہے۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ کل 17ستمبر کو یورپین یونین میں کشمیر زیربحث آنیوالا ہے، احتجاج ضرور کریں مگر وقت اور موقع دینا چاہیے، میری رائے یہ وقت مقامی احتجاج کا نہیں ہے، یہ وقت کشمیریوں کے حق کیلئے احتجاج کا ہے۔

انھوں نے کہا کہ اپوزیشن کو نہتے کشمیری،پاکستانی عوام کی خواہشات کو دیکھنا چاہیے، کشمیری عوام زندگی اور موت کی کشمکش میں ہیں وہ ہمارا سہارا چاہتےہیں، بطور کشمیری سفیر وزیراعظم عمران خان نے نریندرمودی کو للکارا تھا، آپ کو دیکھنا یہ ہے مودی کو للکارنا ہے یا اپنی صفوں میں انتشار پھیلانا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں