site
stats
پاکستان

بھارتی سفارتی اہلکارملک دشمن کاروائیوں میں ملوث تھے، پاکستان

اسلام آباد : پاکستان نے کہا ہے کہ بھارتی سفارتی اہلکار سفارتی آداب کے منافی اورملک دشمن سرگرمیوں اور بلوچستان میں تخریبی کارروائیوں میں ملوث تھے۔

اسلام آباد میں ہفتہ وار میڈیا بریفنگ میں ترجمان دفترخارجہ نفیس زکریا نے کہا کہ بھارتی خفیہ ایجنسی را کے چھ اور آئی بی کے دو اہلکار سفارتکاروں کے بھیس میں پاکستان دشمن سرگرمیوں میں ملوث پائے گئے، بھارتی سفارت خانے کے اہلکاروں کے تحریک طالبان پاکستان سے بھی تعلقات تھے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ بھارت نے ہمارے سفارتی اہلکاروں کو واپس بھیج کرسفارتی آداب کی خلاف ورزی کی ، میڈیا پرسفارتی اہلکاروں کے نام دے ان کی اوران کے اہل خانہ کی زندگیوں کو خطرے میں ڈالا گیا۔

نفیس زکریا نے بتایا کلبھوشن کیس میں تحقیقات جاری ہیں، بھارت نے آٹھ سال گزرنے کے باوجود ممبئی حملہ کیس میں ٹھوس ثبوت فراہم نہیں کئے۔

مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی جارحیت کے حوالے سے نفیس زکریا نے کہا کہ مقبوضہ کشمیرمیں گزشہ چند ماہ سے بھارتی بربریت عروج پر ہے، بھارت سیزفائرکی خلاف ورزی کرتے ہوئے شہری آبادیوں کو نشانہ بنارہا ہے، بھارت نے سفارتی آداب،ویانا کنونشن اور عالمی قوانین کی خلاف ورزیاں کی ہے۔


مزید پڑھیں : بھارتی سفارت کار پاکستان میں دہشت گردی کروانے میں ملوث


یاد رہے گذشتہ روز کلبھوشن یادیو کے بعد پاکستان میں بھارت کا ایک اور بڑا جاسوس نیٹ ورک پکڑا گیا تھا، جس میں دو بھارتی سفارتکار بلبیر سنگھ اور راجیش کمار دہشت گردی میں ملوث نکلے، بھارتی سفارتکاروں کے دہشت گرد نیٹ ورک میں ملوث ہونے کے انکشاف پر انھیں فوری پاکستان سے بے دخل کرنے کا فیصلہ کیا۔

ذرائع کے مطابق بھارتی خفیہ ایجنسی کا افسر بلبیر سنگھ فرسٹ سیکریٹری پریس انفارمیشن کے لبادے میں تعینات تھا، بلبیر سنگھ پاکستان میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں ملوث پایا گیا، راجیش کماراگنی ہوتری بھی دہشت گردی کا نیٹ ورک چلا رہا تھا اور یہ کمرشل قونصلر کے طور پرتعینات تھا۔

اس سے قبل پاکستان نے بھارت کے سفارت کار سرجیت سنگھ کو ناپسندیدہ شخصیت قرار دے دیا اور انہیں اہل خانہ سمیت 29 اکتوبر تک پاکستان چھوڑنے کا حکم دے دیا۔


مزید پڑھیں : بھارتی سفارتکار ناپسندیدہ شخصیت قرار، ملک چھوڑنے کا حکم


اس سے قبل بلوچستان سے دہشت گرد نیٹ ورک چلانے والا را کا اہم افسر اور اس کا پورا نیٹ ورک بھی گرفت میں آچکا ہے۔ جس نے دوران تفتیش دہشت گردی کے سنسنی خیز انکشافات کئے تھے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top