The news is by your side.

بھارت کا خلا میں ہتھیاروں کا استعمال انتہائی تشویش کا باعث ہے، دفتر خارجہ

اسلام آباد: ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا ہے کہ بھارت کا خلا میں ہتھیاروں کا استعمال انتہائی تشویش کا باعث ہے، تجربہ طویل المیعاد دیرپا امن، خلائی سرگرمیوں کے لیے بھی خطرہ ہے۔

تفصیلات کے مطابق بھارت کے خلا میں ہتھیاروں کے استعمال کے تجربے کے معاملے پر ترجمان دفتر خارجہ نے ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ بھارتی تجربے پر عالمی تنظیموں، ماہرین کے جائزے تشویشناک ہیں، ماہرین نے بھی بھارتی تجربے سے خلا میں بکھرے ملبے کو خطرہ قرار دیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ بھارتی تجربے سے بنا ملبہ بین الاقوامی خلائی اسٹیشن کے اوپر پہنچ چکا ہے، تجربے سے ملبے کا بین الاقوامی خلائی اسٹیشن سے تصادم کا خطرہ ہے۔

ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا کہ بھارتی تجربے کے فوجی پہلوؤں کو کسی صورت نظر انداز نہیں کیا جاسکتا ہے، تجربے سے عالمی، علاقائی امن، استحکام، سلامتی پر منفی اثرات مرتب ہوں گے۔

مزید پڑھیں: ناسا نے بھارت کے خلا میں تجربے کو خطرناک قرار دے دیا

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق پاکستان خلا کے فوجی مقاصد کے لیے عدم استعمال کا پرزور حامی ہے، ہم خیال ممالک کے ساتھ قانونی سقم دور کرنے کے لیے ہمہ وقت تیار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ چاہتے ہیں خلا میں پرامن سرگرمیوں کو کوئی خطرات سے دوچار نہ کرے، پاکستان خلائی ٹیکنالوجیز کا سماجی و اقتصادی ترقی کے لیے استعمال چاہتا ہے، موثر قانون کی عدم موجودگی سے دیگر بھی ایسی صلاحیت حاصل کرسکتے ہیں۔

واضح رہے کہ بھارتی وزیراعظم نریندرمودی نے بھارت کی جانب سے خلامیں سیارے کونشانہ بنانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا ہمارے سائنسدانوں نے خلا میں 300کلومیٹر کے فاصلے (ایل ای او) میں محض تین منٹ میں ’مشن شکتی‘کو انجام دیتے ہوئے ایک لائیو سیٹلائٹ کومارگرانے کا مظاہرہ کیا۔

امریکی خلائی ادارے ناسا نے بھی بھارتی تجربے کے بعد ملبے کوخطرناک قراردیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں