The news is by your side.

Advertisement

‘طالبان کے لیے امتحان’

کابل: امریکا کے نمائندہ خصوصی برائے افغان عمل رہنے والے زلمے خلیل زاد کا کہنا ہے کہ امریکی وغیرملکی افواج کے انخلا کے بعد افغان طالبان کو اب امتحان کا سامنا ہے۔

اپنے تازہ بیان میں زلمے خلیل نے کہا کہ افغانستان میں امریکی جنگ ختم ہو چکی ہے، امریکی انخلا کے بعد اب افغانوں کے لیے فیصلے کا لمحہ ہے، افغانستان کا مستقبل افغانوں کے ہاتھ میں ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ افغان عوام مکمل خود مختاری کے ساتھ اپنا راستہ منتخب کریں گے۔

قبل ازیں امریکی وزیر خارجہ انتھونی بلنکن نے پریس بریفنگ کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی کے خطرے کے سائے میں انخلا کا آپریشن مکمل کیا گیا، افغانستان میں فوجی مشن ختم اور سفارتی مشن شروع ہو چکا ہے۔

افغانستان سے 20سال بعد امریکی فوج واپس چلی گئی

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ اس وقت امریکی سفارت کار افغانستان سے جا چکے ہیں، دوحہ میں امریکی سفارت کار طالبان سے رابطہ کریں گے۔ 1 لاکھ 23 ہزار سے زائد افراد کو بحفاظت افغانستان سے منتقل کیا گیا۔

خیال رہے کہ افغانستان میں گزشتہ 20سال سے موجود امریکی افواج بالآخر واپس چلی گئیں، امریکی صدر جو بائیڈن نے افغانستان میں جنگ کے خاتمے کا اعلان کردیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں