The news is by your side.

Advertisement

وہ غذائیں جو پرسکون نیند میں رکاوٹ بن سکتی ہیں

8 سے 10 گھنٹے کی گہری اور پرسکون نیند ہماری صحت کے لیے بے حد ضروری ہے اور اس کی کمی بے شمار مسائل کا باعث بن سکتی ہے۔

تاہم ہم اپنی روزمرہ زندگی میں انجانے میں ایسی غذائیں استعمال کر رہے ہیں جو ہماری نیند کو متاثر کرنے کا سبب بن رہی ہے، ان غذاؤں میں کئی ایسے اجزا شامل ہوتے ہیں جو نیند پر براہ راست اثر انداز ہوتے ہیں۔

آئیں دیکھتے ہیں کہ وہ غذائیں کون سی ہیں۔

کیفین

کیفین ہمارے اعصابی نظام کو متحرک رکھتا ہے اور نیند کو بھگاتا ہے، کافی، چائے اور سافٹ ڈرنکس میں اس کی بہت زیادہ مقدار ہوتی ہے۔ سونے سے پہلے چائے، کافی یا کولڈ ڈرنکس کا استعمال نیند میں خلل ڈال سکتا ہے۔

ٹماٹر یا اس سے بنی چیزیں

ماہرین کا خیال ہے کہ ٹماٹر تیزابی خواص رکھتا ہے، اس لیے ٹماٹر سے بنے کھانے اسی وقت کھائیں جب آپ کے سونے میں کم از کم 3 گھنٹے کا وقت ہو ورنہ یہ نیند میں بار بار رکاوٹ بن سکتا ہے۔

مصالحہ دار اور مرغن کھانے

مصالحے دار اور مرغن کھانے جہاں سینے کی جلن اور تیزابیت کا باعث بنتے ہیں، وہیں نظام انہضام پر بھی انتہائی برے اثرات مرتب کرتے ہیں، اس لیے ضروری ہے کہ سونے سے پہلے مصالحے دار اور مرغن غذاؤں کے بجائے ہلکی خوراک لی جائے۔

مٹھائیاں

روایتی مٹھائیاں اپنے اجزا کی وجہ سے بہت بھاری ہوتی ہیں، یہ سونے میں مشکل پیدا کرسکتی ہیں۔

فاسٹ فوڈ

فاسٹ فوڈ کو اپنی خوراک کا لازمی حصہ بنالینا کئی بیماریوں کا باعث بن سکتا ہے۔ فاسٹ فوڈ میں چینی، چکنائی اور کاربوہائیڈریٹس کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے، جو نیند میں مسائل کا باعث بنتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں