The news is by your side.

Advertisement

کرونا وائرس کے حملے سے بچنا ہے تو ان غذاؤں سے دوستی کرلیں

ماہرین اس بات پر متفق ہیں کہ غذاؤں کے ذریعے قوت مدافعت بڑھا کر کسی حد کرونا وائرس سے تحفظ حاصل کیا جاسکتا ہے، تاہم حال ہی میں کی گئی ایک تحقیق سے اس بارے میں مزید تفصیلات سامنے آئیں۔

حال ہی میں 6 ممالک میں ہونے والی ایک تحقیق سے علم ہوا کہ پھلوں، سبزیوں اور مچھلی پر مشتمل غذاؤں کا استعمال کووڈ 19 کا شکار ہونے پر اس کی شدت کو بڑھانے سے روکنے میں مددگار ثابت ہوسکتا ہے۔

تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ پھلوں اور سبزیوں پر مشتمل غذا سے کووڈ 19 کی سنگین شدت کا خطرہ 73 فیصد جبکہ مچھلی یہ خطرہ 59 فیصد تک کم کرسکتی ہے۔

اس سے قبل بھی متعدد تحقیقی رپورٹس میں عندیہ دیا گیا تھا کہ غذا ممکنہ طور پر کووڈ 19 کی علامات کی شدت اور دورانیے میں کردار ادا کرسکتی ہے، مگر اس حوالے سے شواہد زیادہ ٹھوس نہیں تھے۔

اس کی جانچ پڑتال کے لیے اس نئی تحقیق میں محققین نے 3 ہار کے قریب ڈاکٹروں اور نرسوں سے فرانس، جرمنی، اٹلی، اسپین، برطانیہ اور امریکا میں سروے کیا۔ یہ سب سروے ہیلتھ کیئر گلوبز نیٹ ورک کا حصہ تھے اور ماہرین نے نیٹ ورک کو استعمال کر کے ڈاکٹروں میں کووڈ 19 کے خطرے کو شناخت کیا۔

یہ سروے جولائی اور ستمبر 2020 میں ہوا اور رضاکاروں سے غذائی رجحانات سے 47 سوالات پر مشتمل سوالات کی مدد سے جانا گیا۔ سروے میں ان کے پس منظر، طبی تاریخ، ادویات کے استعمال اور طرز زندگی کے بارے میں بھی معلومات حاصل کی گئیں۔

تحقیق میں شامل 568 افراد نے بتایا کہ ان میں کووڈ 19 کی علامات یا بغیر علامات والی بیماری کی تشخیص ہوئی تھی، 2 ہزار 316 افراد اس بیماری سے محفوظ رہے تھے۔ 568 میں سے 138 افراد نے بتایا کہ ان میں بیماری کی شدت معتدل سے سنگین رہی جبکہ باقی افراد کو معمولی بیماری کا سامنا ہوا تھا۔

مختلف عناصر کو مدنظر رکھنے کے بعد دریافت کیا گیا کہ جن افراد کی غذا میں پھلوں، سبزیوں، گریوں اور مچھلی کا زیادہ استعمال ہوتا تھا ان میں کووڈ 19 کی متعدل سے سنگین شدت کا خطرہ دیگر کے مقابلے میں بالترتیب 73 اور 59 فیصد تک کم ہوا۔

اسی طرح کم کاربوہائیڈریٹس اور زیادہ پروٹین استعمال کرنے والے افراد میں یہ خطرہ لگ بھگ 4 گنا کم دریافت ہوا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں