یمن میں امن کا مشن، حوثی باغیوں کا وفد مذاکرات کے لیے سوئیڈن پہنچ گیا
The news is by your side.

Advertisement

یمن میں امن کا مشن، حوثی باغیوں کا وفد مذاکرات کے لیے سوئیڈن پہنچ گیا

صنعا: یمن میں جاری شدید خانہ جنگی کے پیش نظر امن مشن کی خاطر حوثی باغیوں کا وفد مذاکرات کے لیے سوئیڈن پہنچ گیا۔

تفصیلات کے مطابق یمن کی بندرگاہ الحدیدہ میں حالیہ دنوں میں حوثی باغیوں اور یمنی فورسز کے درمیان شدید چھڑپیں ہوئی تھیں اس دوران متعدد ہلاکتیں بھی سامنے آئی تھیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق یمنی حکومت اور حوثی باغی مذاکرات کے لیے ایک پیج پر ہیں، اسی بابت دونوں فریقین کے درمیان مذاکرات سوئیڈن میں ہوں گے۔

دوسری جانب باغیوں نے صنعا ایئرپورٹ کھولنے اور سعودی اتحاد پر ڈرون اور میزائل حملے نہ کرنے کا اعلان کیا ہے، یمنی حکومت کا وفد آج اسٹاک ہوم جائےگا۔

اس سے قبل رواں سال جون میں اقوام متحدہ کے خصوصی مندوب برائے یمن مارٹن گریفتھس کا کہا تھا کہ یمن کے ایران نواز حوثی باغی اور بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ یمنی حکومت آئندہ چند ہفتوں میں مذاکرات کی میز پر ہوں گے۔

یمن: سرکاری فورسز اور حوثی باغیوں میں جھڑپیں، 73 باغی ہلاک

مذاکرات سے متعلق اس اہم فیصلے کے بعد اب یہ امید کی جارہی ہے کہ یمن میں جاری تین سالہ خانہ جنگی اب ختم ہوجائے گی، اس لڑائی میں اب تک دس افراد ہلاک جبکہ لاکھوں لوگ زخمی ہوچکے ہیں۔

واضح رہے کہ گذشتہ ماہ یمن میں سرکاری فورسز اور حوثی باغیوں کے درمیان جھڑپوں کے نتیجے میں 73 باغی جبکہ 11 فوجی اہلکار ہلاک ہوگئے تھے۔

یاد رہے کہ 6 ستمبر کو ایران نواز حوثی جنگجوؤں کی جانب سے سعودی عرب کے شہر نجران پر داغے گئے میزائلوں کو فضا میں ہی تباہ کردیا گیا تاہم 2میزائل کا ملبہ گرنے سے بچوں سمیت 26 افراد زخمی ہوگئے تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں