The news is by your side.

Advertisement

غیرملکی فنڈنگ کیس ، ن لیگ نے تحریک انصاف کےالزامات مسترد کردیئے

اسلام آباد : مسلم لیگ ن کےخلاف غیرملکی فنڈنگ کیس میں ن لیگ نے تحریک انصاف کے الزامات کو من گھڑت اوربے بنیاد قرار دے کر مسترد کردیا اور درخواست خارج کرنے کی استدعا کردی۔

تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن کے تین رکنی کمیشن نے مسلم لیگ ن کے خلاف مبینہ غیرملکی فنڈنگ سے متعلق درخواست کی سماعت کی، مسلم لیگ ن نے چیئرمین پارٹی راجہ ظفرالحق کا بیان حلفی اورآڈیٹرزکی رپورٹ سمیت غیرملکی پارٹی فنڈنگ کی تفصیلات پر مشتمل جواب جمع کرایا۔

مسلم لیگ ن نے جواب میں درخواست کو من گھڑت اور بے بنیاد قراردیتے ہوئے کہا کہ مسلم لیگ ن 2002 سے پارٹی تفصیلات جمع کرارہی ہے، جماعت کسی ممنوعہ ذرائع سے فنڈنگ حاصل نہیں کررہی۔

وکیل پی ٹی آئی نے جواب کی کاپی فراہم نہ کرنے کا بتایا تو ممبر کمیشن الطاف ابراہیم قریشی نے مسلم لیگ ن کے وکیل پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے بیس جنوری تک تحریک انصاف کو جواب کی کاپی فراہم کرنے کی ہدایت کی تھی۔

الیکشن کمیشن نے ن لیگ کے وکیل کو پی ٹی آئی کو جواب کی کاپی فراہم کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت یکم فروری تک ملتوی کردی

بعد ازاں رہنما پی ٹی آئی فواد چودھری نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سیاسی جماعتیں اپنے اکاؤنٹس الیکشن کمیشن میں ڈیکلئیر کرنے کی پابند ہیں لیکن ن لیگ الیکشن کمیشن سے جوتے اتار کر بھاگ رہی ہے۔


مزید پڑھیں : پی ٹی آئی نے مسلم لیگ ن  کے خلاف فارن فنڈنگ کیس دائر کردیا


انکا کہنا تھا کہ نواز شریف نے اپنی پارٹی کو بھی منی لانڈرنگ کے لیے استعمال کیا۔ فواد چوہدری نے لیگی رہنماوں پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ خواجہ آصف بینک کلرک، مشاہداللہ پی آئی اے میں لوڈراوراسحاق ڈار کی پان کی دکان تھی جبکہ سعد رفیق لاہور میں ویگنوں سے بھتہ لیتے تھے،نواز شریف کے ساتھیوں کی سیاست سے پہلے کمائی ٹکوں میں تھی اب کروڑوں ہیں، ن لیگ کوجواب دیناہوگا۔

یاد رہے کہ پاکستان تحریک انصاف نے ن لیگ کے خلاف الیکشن کمیشن میں فارن فنڈنگ کے حوالے سے کیس دائر کیا تھا ، جس میں مؤقف اختیار کیا گیا تھا کہ ن لیگ نےبیرون ملک ممنوعہ ذرائع سے بھاری رقوم حاصل کیں اور کاغذات نامزدگی میں ان ذرائع کو بھی خفیہ رکھا گیا لہذا الیکشن کمیشن ن لیگ کی چھپائی گئی تفصیلات کی جانچ پڑتال کرے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں