The news is by your side.

Advertisement

‘ملائیشیا میں پی آئی اے کا طیارہ تحویل میں لئے جانے کے معاملے کو جلد حل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں’

اسلام آباد : وزارت خارجہ کے ترجمان زاہد حفیظ کا کہنا ہے کہ ملائیشیا میں پی آئی اے کا طیارہ تحویل میں لئے جانے کے معاملے کو جلد حل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وزارت خارجہ نے ملائیشیا میں پی آئی اے کا طیارہ تحویل میں لئے جانے کے معاملے پر اپنے بیان میں کہا ہے کہ ملائیشیا میں پاکستانی ہائی کمیشن ، متعلقہ حکام اور پی آئی اےسے رابطے میں ہے ، معاملے کو جلد حل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

ترجمان دفترخارجہ زاہد حفیظ کا کہنا تھا کہ مسافروں کا مکمل خیال رکھا جا رہا ہے ، مسافروں کو متبادل ذرائع سے بھیجنے کیلئے انتظامات مکمل کرلئےگئے ہیں۔ مسافر آج رات کوالالمپور سے پرواز ای کے343سےروانہ ہوں گے۔

دوسری جانب معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں کہا کہ پی آئی اےکابوئنگ777طیارہ ملائیشیامیں روکاگیا، یہ طیارہ 12 سال پہلے لیز پر لیا گیا تھا اور کوروناکی وجہ سےیہ طیارہ گزشتہ مہینوں میں زیر استعمال نہیں تھا، جیسے پوری دنیامیں کورونا کی وجہ سے ریٹ کم ہوئے، پی آئی اےبھی ان کے ساتھ نئے ریٹ پربات چیت کررہی تھی، کیس برطانیہ کی عدالت میں زیرسماعت ہے۔

ڈاکٹر شہباز گل کا کہنا تھا کہ ملائیشیا سے سارے معاملے کا کچھ لینا دینا نہیں تھا، لیزکرنے والی کمپنی ملائیشیاکی تھی نہ ہی وہاں کوئی کیس چل رہاتھا، اچانک اسٹےآرڈرلےکروہاں طیارہ روک لیا گیا، پی آئی اےملکی پیسہ نہ بچاتا،لٹاتا رہتا تو تنقید کرنے والےخوش ہوتے۔

معاون خصوصی نے مزید کہا کہ تنقیدکرنےوالوں کوسمجھناچاہئےادارہ قومی بچت کی کوشش کر رہاہے اور برطانیہ میں کیس لڑ رہا ہے، لیز کرنے والی کمپنی ملائیشیا میں اسٹے آرڈر لے لیتی ہے، ہمیں بطورپاکستانی پی آئی اےانتظامیہ کوسپورٹ کرناچاہئے، تنقیدنہیں کرنی چاہئےکیونکہ وہ بچت کی کوشش کر رہے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں