The news is by your side.

Advertisement

عالمی برادری مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جارحیت کا نوٹس لے، نفیس ذکریا

اسلام آباد : ترجمان دفتر خارجہ نفیس زکریا نے کہا ہے کہ بھارت کشمیر کے معاملے سے توجہ ہٹانے کے لیے ورکنگ باؤنڈری اور لائن آف کنٹرول پر نہتے شہریوں پر فائرنگ کر رہا ہے۔ کل پاکستان سمیت دنیا بھر میں یوم سیاہ منایا گیا، اس حوالے سے دفتر خارجہ اور مشنز نے یوم سیاہ منایا۔

اسلام آباد میں ترجمان دفتر کے خارجہ نفیس زکریا نے ہفتہ وار بریفنگ میں کہا کہ کلبھوشن یادیو سے متعلق ڈوزئیر تکمیل کے مراحل میں ہے، مناسب وقت آنے پر ڈوزئیر متعلقہ اٹھارٹی کو جمع کروا دیا جائے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارت کشمیر کے معاملے سے توجہ ہٹانے کے لیے ورکنگ باؤنڈری اور لائن آف کنٹرول پر شہریوں پر فائرنگ کر رہا ہے، اسی دن کشمیر پر بھارتی تسلط کے سیاہ دور کا آغاز ہوا، اسی دن سے کشمیر میں ریاستی دہشتگردی، نسل کشی اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا طویل سلسلہ شروع ہوا، مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جارحیت جاری ہے۔

ترجمان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں تعینات پولیس بھی بھارتی فوج کے زیر اثر ہے، کشمیر میں اس وقت بھارتی افواج کی تعداد دس لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے، مقبوضہ کشمیر میں خوراک اور ادویات کی قلت شدید ہوگئی ہے، کشمیری قیادت کی نظر بندی بھی ختم نہیں کیا جا رہی، عالمی برادری اس کا نوٹس لے، بھارتی ہائی کمشنر کو کل سمن کیا گیا تھا اور سرجیت سنگھ کی واپسی کا پروانہ تھمایا گیا ۔ سیکرٹری خارجہ نے بھارت میں پاکستانی کمیشن سٹاف کیساتھ ناروا رویے پر احتجاج کیا ۔

نفیس ذکریا کا کہنا تھا کہ ہم نے دیکھنا ہے کہ ہمارا فوکس کیا ہے، بھارت کا فوکس صرف و صرف کشمیر سے توجہ ہٹانا ہے، پاکستانی ہائی کمیشن کے اہلکار کو ناپسندیدہ قرار دینا، لائن آف کنٹرول اور ورکنگ باؤنڈری پر جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی، یہ سب پاکستان میں جاری بھارتی مداخلت سے توجہ ہٹانے کے لیے ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان پر کامیابی سے عملدرآمد جاری ہے، حقانی گروپ کے متعدد رہنما افغانستان میں امریکی ڈرون حملوں میں مارے گے۔ حقانی گروپ پر افغانستان میں حملے واضح کرتے ہیں کہ حقانی نیٹ ورک کہاں موجود ہے، بھارت کشمیر کے معاملے اے توجہ ہٹانے کے لیے ورکنگ باؤنڈری اور لائن آف کنٹرول پر شہریوں پر فائرنگ کر رہا ہے، ہم نے دیکھنا ہے کہ ہمارا فوکس کیا ہے۔

بھارت کا فوکس صرف و صرف کشمیر سے توجہ ہٹانا ہے ۔پاکستانی ہائی کمیشن کے اہلکار کو ناپسندیدہ قرار دینا، لائن آف کنٹرول اور ورکنگ باؤنڈری پر جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی، یہ سب پاکستان میں جاری بھارتی مداخلت سے توجہ ہٹانے کے لیے ہے، ترجمان بھارتی سیاستدان پاک بھارت کشیدگی کو مقامی سیاست میں استعمال کرتے ہیں۔

ترجمان نے کہا کہ بھارت کا یہ ٹریک ریکارڈ رہا ہے، 2014 کے بھارتی عام انتخابات میں بھی بھارتی سیاستدانوں نے ایل او سی پر کشیدگی کی صورتحال پیدا کی، بھارت اب بھی ایک طرف کشمیر سے توجہ ہٹا رہا ہے تو دوسری طرف مقامی انتخابات میں پروپیگنڈہ کر رہا ہے، سرجیت سنگھ پاکستانی کی سلامتی کے خلاف کام کر رہا تھا، سرجیت سنگھ کی پاکستان مخالف سرگرمیوں کی باوثوق معلومات موجود تھیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں