مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم پر عالمی برادری نوٹس لے: دفتر خارجہ -
The news is by your side.

Advertisement

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم پر عالمی برادری نوٹس لے: دفتر خارجہ

اسلام آباد: ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کا سلسلہ جاری ہے، اسکالر ڈاکٹر منان وانی سمیت 7 کشمیریوں کو شہید کیا گیا۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم انسانی حقوق کے علمبر داروں کی آنکھیں کھولنے کے لیے کافی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے ہفتہ وار بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ شنگھائی تعاون تنظیم اجلاس میں وزیر خارجہ نے پاکستان کی نمائندگی کی، وزیر خارجہ نے کانفرنس میں علاقائی روابط اور سی پیک پر روشنی ڈالی۔

انہوں نے کہا کہ وزیر خارجہ نے ایس سی اجلاس میں وزیر اعظم کا خیر سگالی کا پیغام پہنچایا، وزیر خارجہ نے دہشت گردی کے خلاف قربانیوں کے بارے میں بات کی۔ رکن ممالک کو دہشت گردی کے خلاف جنگ میں خدمات کی پیشکش کی۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ وزیر خارجہ اور ایرانی ہم منصب میں ایرانی بارڈر گارڈز کے اغوا پر بھی بات ہوئی، دونوں اطراف کے ڈی جی ایم اوز معاملے پر رابطے میں ہیں۔ ایران کے وزیر خارجہ نے پاکستان کی خدمات کا شکریہ ادا کیا۔

انہوں نے کہا کہ چہلم امام حسین پر ویزوں سے متعلق ایران اور عراق سے رابطے میں ہیں، امید ہے ویزوں کا مسئلہ حل ہو جائے گا۔ ’یہ بھی بتایا گیا کہ ویزوں کا مسئلہ کافی حد تک حل ہو گیا ہے‘۔

ترجمان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کا سلسلہ جاری ہے، اسکالر ڈاکٹر منان وانی سمیت 7 کشمیریوں کو شہید کیا گیا۔ بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر میں احتجاج پر پابندی لگائی۔ بھارتی مظالم انسانی حقوق کے علمبر داروں کی آنکھیں کھولنے کے لیے کافی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی نے منان وانی کی شہادت پر مذمتی قرارداد منظور کی ہے۔ ’پاکستان بھارتی مظالم کی مذمت کرتا ہے، عالمی برادری نوٹس لے‘۔

ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ پاکستان کا مؤقف دیرینہ ہے افغان مسئلے کا فوجی حل نہیں۔ امریکا اور افغانستان اس مؤقف کو سمجھ رہے ہیں۔ افغانستان میں مفاہمت کی تمام کوششوں کا خیر مقدم کرتے ہیں۔ دوحہ میں ہونے والی کسی ملاقات اور پیش رفت کا علم نہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان چاہتا ہے افغانستان کے حالات بہتر ہونے تک اتحادی فوج رہے، اتحادی فوج کے افغانستان سے انخلا سے سیکیورٹی کے مسائل پیدا ہوں گے۔ افغان وزیر خارجہ کا دورہ پاکستان انتخابات کے باعث ملتوی کیا گیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ سعودی صحافی سے متعلق بیان پہلے جاری کر چکے ہیں۔ سعودی عرب کے ساتھ بہت سے امور پر بات ہو رہی ہے۔

ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ قومی ایئر لائن کو دہلی میں بینک اکاؤنٹس کے معاملات میں مسائل کا سامنا ہے۔ اکاؤنٹس کی ریگولرائزیشن کا معاملہ اب دہلی ہائی کورٹ میں ہے۔ قومی ایئر لائن افسران کے اہل خانہ کو بھارت نے ویزے کا اجرا بھی نہیں کیا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان میں معصوم زینب کے قاتل کو پھانسی دے دی گئی، مقبوضہ کشمیر میں 8 سال کی آصفہ کے قاتلوں کو اب تک سزا نہ ملی۔ آصفہ کے والدین انتہا پسندوں کے باعث اپنے گاؤں میں بچی کی تدفین بھی نہ کر سکے۔ ’بچی آصفہ کے قاتل آج بھی آزاد ہیں‘۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں