site
stats
اہم ترین

خواجہ آصف نے خارجہ پالیسی میں تبدیلی کا عندیہ دے دیا

Foreign Policy

اسلام آباد: وزیرِ خارجہ خواجہ آصف چین کے دورے پر روانہ ہوگئے ہیں ‘ روانگی سے قبل انہوں خارجہ پالیسی کے بنیادی خدو خال میں تبدیلی کا عندیہ دیتے ہوئے کہا کہ دنیا کو بتائیں کہ ہم نے کتنی قربانیاں دی ہیں‘ قربانیوں کا اعتراف کرنے والے ممالک کے ساتھ پاکستان آگے بڑھے گا۔

تفصیلات کے مطابق وزیرِ خارجہ خواجہ آصف آج چین روانہ ہوگئے ہیں‘ مشیر قومی سلامتی ناصر جنجوعہ بھی ان کے ہمراہ ہیں‘ روانگی سے قبل پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ان کاکہنا تھا کہ پاکستان عالمی سطح پرتنہائی کاشکارنہیں ۔خارجہ پالیسی کے نئے خدوخال لائیں گے اور کشمیرکوہرفورم پراجاگرکریں گے۔

وزیرخارجہ خواجہ آصف نے خارجہ پالیسی پر پریس بریفنگ میں دوٹوک موقف بیان کردیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم نے بیانیہ تیارکرلیا ہے ،دنیا کو بتائیں گے کہ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف کتنی لازوال قربانیاں دیں ۔

تین روزہ سفراء کانفرنس کے اختتام پر خواجہ آصف نے کہا امریکہ کے ساتھ تعلقات ختم نہیں کررہےتاہم تعلقات کوباہمی احترام پرمبنی دیکھناچاہتےہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ بھارت کے ساتھ بنیادی مسئلہ کشمیر ہے، کشمیرکوہرفورم پراجاگرکرنےکافیصلہ کرلیا ہے۔

انہوں نےکہاکہ یہ کہنا غلط ہے کہ پاکستان عالمی طور پر تنہائی کا شکار ہے،گزشتہ چالیس سال کا ملبہ کچھ دنوں میں ٹھیک کردیا جائے یہ ممکن نہیں۔

وزیر خارجہ خواجہ آصف کہتے ہیں امریکا سے تعلقات ختم نہیں کررہےملکی مفادترجیح ہے،خطےمیں تبدیلیوں کےتناظرمیں کچھ فیصلےجلدکرناہوں گے،آج چین جارہا ہوں، دو تین دن میں ایران جاؤں گا‘ایرانی صدراوروزیرخارجہ سےملاقات شیڈول ہے۔ایران کےساتھ طویل سرحدرکھتےہیں تعلقات تاریخی ہیں

ان کا کہنا تھا کہ محتاط انداز میں کہوں گا کہ خارجہ پالیسی کا نیا خدو خال لے کر آئیں گے ‘ وزیر اعظم نے بھی نئے خدوخال پر زور دیا ہے ۔جنرل اسمبلی کےدورےسےپہلےدوست ممالک کادورہ کروں گا‘ کشمیرکوہرفورم پراجاگرکرنےکافیصلہ کیاہے۔

خواجہ آصف نے برکس پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ’برکس میں نئی بات نہیں یہی ہارٹ آف ایشیامیں بھی تھا۔برکس میں جن تنظیموں کانام لیاگیا وہ پاکستان میں کالعدم ہیں‘ چین نےبرکس اعلامیہ میں بھارت کی بہت چیزیں شامل نہیں کیں‘۔

گزشتہ روز افغان وزیرِ داخلہ سے رابطہ ہوا‘ ہم چاہتےہیں افغانستان سےبرادرانہ تعلقات ہوں‘ خطےمیں رہنےوالےخوداپنےمسائل کابہترحل ڈھونڈسکتےہیں۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ پاکستان واحدملک ہےجس نےدہشت گردی کے خلاف جنگ جیتی‘ ہم نےدہشت گردوں کااپنےملک سےصفایاکیا۔دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہم نےبہت کچھ کھویا ہے ‘ پایاکچھ نہیں،دنیابےشک انکارکرےلیکن پاکستان کی بہادرقوم ہے اور آج ملک میں امن کا سبب فوج کی لازوال قربانیاں ہیں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top