The news is by your side.

چترال میں سولہ لاکھ پودے لگانے کی مہم کا آغاز

چترال: بلین سونامی فاریسٹیشن مہم کا آغاز کردیا گیا ہے‘ اس مہم کا آغاز گورنمنٹ مڈل سکول جغور بالا‘ چترال سے ہوا۔ شجرکاری مہم کے آغاز پر اسی سکول میں ایک تقریب بھی منعقدہوئی جس میں ڈپٹی کمشنر چترال ارشاد علی سودھر مہمان خصوصی تھے‘ مہم میں سولہ لاکھ پودے لگائے جائیں گے۔

تفصیلات کےمطابق چترال میں اس تقریب کا مقصد صوبے میں جاری شجر کاری مہم کے اغراض و مقاصد حاصل کرنا ہے‘ اور دوسری جانب اس شجرکاری سے چترال میں سیلاب کے روک تھام میں بھی مدد ملے گی۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈی سی چترال نے کہا کہ شجرکاری مہم کے دوران علاقے کے منتحب کونسلرز اور ناظمین میں اخروٹ اور دیگر پودے مفت تقسیم کئے جارہے ہیں مگر یہ صرف پودا لگانا مقصد نہیں ہے بلکہ اس پودے کی رکھوالی بھی کرنی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ملک کے دوسرے علاقوں کیلئے پودے صرف ماحول کی بہتری کیلئے ضرروی ہے مگر چترال کیلئے تو زندگی اور موت کا معاملہ ہے کیونکہ جب درخت کاٹے جاتے ہیں یا جن علاقوں میں درخت نہیں ہوتے‘ وہاں سیلاب تباہی مچاتا ہے اور ہر سال کثیر تعداد میں مالی نقصان کے ساتھ ساتھ انسانی جانوں کا بھی ضیاع ہوتا ہے۔ کئی سال پہلے متعدد افراد سیلاب میں جاں بحق ہوئے۔

ڈویژنل فارسٹ آفیسر شوکت فیاض نے عوام پر زور دیا کہ وہ ان کے ساتھ اس کار خیر میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے اور بھر پور تعاون کرے کیونکہ جب تک عوام تعاون نہ کرے کوئی بھی منصوبہ کامیاب نہیں ہوسکتا۔انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت کے شجرکاری مہم میں صوبے کے چپہ چپہ پر پودے لگارہے ہیں اور چترال پر خصوصی توجہ دے رہے ہیں کیونکہ یہ ماضی میں دیار کے درختوں کا گڑھ تھا جو لوگوں کی ناسمجھی اور کچھ محکمے کی اہل کاروں کی کمزوریوں کی وجہ سے آہستہ آہستہ ختم ہورہے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ محکمہ جنگلات کوشش کررہا ہے کہ جنگلات کی کمی پر قابو پایا جاسکے کیونکہ یہ پہاڑی علاقہ ہے اور یہاں ہر سال سیلاب تباہی مچاتا ہے اگر زیادہ سے زیادہ درخت لگائے جائے تو وہ ایک قدرتی چیک ڈیم یعنی سیلاب کی راہ میں رکاوٹ بن جاتے ہیں اور سیلاب کی رفتار کو کم کرتے ہیں جس سے نقصان یا تو نہیں ہوتا یا اس کا شرح کم سے کم ہوجاتی ہے۔

مہمان خصوصی نے مفت پودے تقسیم کرنے کے بعد سکول میں دیار کا پودا بھی لگایا ‘بعد میں فارسٹ ٹیم کے ساتھ ڈی سی چترال بھی بکر آباد پہاڑی کے اس چوٹی پر چڑھ گئے جہاں محکمہ جنگلات بہت دور سے پانی لاکر اس لق دق پہاڑ پر جنگل لگارہے ہیں۔ ڈی سی چترال، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر منہاس الدین نے بھی پہاڑ کے چوٹی پر پودے لگائے۔ سب ڈویژنل فارسٹ آفیسر عمیر نواز کا کہنا ہے کہ بلین ٹری سونامی افاریسٹیشن مہم میں اس سال پورے چترال میں سولہ لاکھ پودے لگائے جائیں گے۔

اس موقع پر دیہی ترقیاتی آفیسر شہاب نے کہا کہ چترال ریڈ زون میں ہے اور سیلاب کی تباہی سے بری طرح متاثر ہورہا ہے۔ پودے لگانے سے نہ صرف یہاں کی ماحول میں خوبصورتی میں اضافہ ہوتا ہے بلکہ اس کے ذریعے زر مبادلہ بھی کمایا جاسکتا ہے اور ان درختوں کی بدولت یہاں کے لوگ تباہی سے بھی بچ سکتے ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں