The news is by your side.

Advertisement

امریکا کی بھارت کوملٹری ٹیکنالوجی کی فراہمی پرتشویش ہے، ترجمان دفتر خارجہ

اسلام آباد : ترجمان دفتر خارجہ نے کہا ہے کہ امریکا کی جانب سے بھارت کو جدید ملٹری ٹیکنالوجی کی فراہمی پرتشویش ہے جس سے خطے میں امن کا خطرہ اور دفاعی عدم توازن کا خدشہ بڑھ گیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ پاکستان نفیس زکریا  ٹرمپ مودی ملاقات کے بعد امریکا اور بھارت مشترکہ اعلامیے پررد عمل دے رہے تھے, انہوں نے کہا کہ اعلامیہ خطےکےامن واستحکام میں مددگارثابت نہیں ہوگا اور خطے میں کشیدگی کی وجہ جانے بغیرجاری کیا گیا اعلامیہ خرابی کا باعث بنے گا۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ ٹرمپ مودی ملاقات میں خطےمیں کشیدگی کم کرانےکا موقع گنوادیا گیا ہے اور ساتھ ہی ٹرمپ مودی ملاقات میں مودی نے بھارتی پالیسیوں پرنظر ثانی کا نادر موقع بھی کھودیا گیا ہے۔


 *امریکا کی بھارت کو 366ملین ڈالر کے جنگی طیارے دینے کی منظوری 


ترجمان دفتر خارجہ نفیس زکریا نے کہا کہ ملٹری ٹیکنالوجی کی فروخت سے خطے میں فوجی عدم توازن پیدا ہوگا اور بھارت کو جدید ٹیکنالوجی کی فراہمی خطے کے امن کو خطرے میں ڈال دی گئی اوراس صورت حال میں بھارت پاکستان مخالف جارحیت اور مہم جوئی میں اضافہ کرے گا۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ بھارت نے کالعدم ٹی ٹی پی کو پاکستان کے خلاف پراکسی وار کے طور پر استعمال کرتے ہوئے  پاکستان اور خطے کو غیر مستحکم کرنے کے بھارتی عزائم کو نظر انداز نہیں کیا جاسکتا ہے۔


*امریکہ نے کشمیری رہنما سید صلاح الدین کو عالمی دہشت گرد قرار دے دیا 


انہوں نے کہا کہ پاکستان میں دہشت گردی کو ہوا دینے والوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کررہے ہیں اور پاکستان مسئلہ کشمیر سمیت تمام تصفیہ طلب معاملات کے حل کیلئے تیار ہے تاہم تحریک آزادی کو دہشت گردی سے تشبیہ نہیں دی جاسکتی ہے۔

خیال رہے 27 جون کو بھارت کے وزیراعظم نریندر مودی نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے واشنگٹن میں ملاقات کی اور دفاعی معاہدوں پر دستخط کیئے گئے جس کے دوران ٹرمپ نے بھارت کو سچا دوست قرار دیا جب کے اگلے ہی روز کشمیری مجاہد صلاح الدین کو دہشت قرار دے دیا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں