The news is by your side.

Advertisement

سوڈان کے معزول صدر عمرالبشیر پر مالی بدعنوانی کا الزام عائد

خرطوم: سوڈان کے معزول صدر عمرالبشیر پر غیر ملکی کرنسی قبضے میں رکھنے اور مالی بدعنوانی کا الزام عائد کردیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق سوڈان کے پبلک پراسیکیوٹر نے معزول صدر عمر البشیر پر مالی بدعنوانی کا الزام عائد کیا ہے، سوڈان کی سرکاری خبر رساں ایجنسی نے تصدیق کردی۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق پراسیکیوٹر جنرل نے 11 اپریل کو فوج کے ہاتھوں معزول ہونے والے سابق صدرعمر البشیر پر مالی بدعنوانی اور اختیارات کے ناجائز استعمال جیسے الزامات عائد کیے ہیں۔

معزول صدر پر غیر ملکی کرنسی قبضے میں رکھنے، حرام کی دولت جمع کرنے اور مشکوک جائیدادیں بنانے کا الزام ہے۔ خیال رہے کہ سوڈان میں عوام کے طویل احتجاج کے بعد ملک کی مسلح افواج نے سابق صدر عمر البشیر کو ان کےعہدے سے ہٹا کر اقتدار اپنے ہاتھ میں لے لیا تھا۔

عمر البشیر کی معزولی کے بعد قائم کی جانے والی عبوری عسکری کونسل کے سربراہ جنرل عبدالفتاح البرھان نے دعویٰ کیا تھا کہ سابق صدر کی رہائش گاہ سے 10 کروڑ 13 لاکھ ڈالر کی نقد رقم برآمد ہوئی۔

انہوں نے مزید کہا کہ ملٹری انٹیلیجنس، پولیس اور دیگر سیکیورٹی تحقیقاتی اداروں نے عمر البشیر کے گھر کی تلاشی کے دوران 70 ملین یورو، تین لاکھ 50 ہزار ڈالر اور پانچ ارب سوڈانی پاﺅنڈ قبضے میں لیے۔

سوڈان میں مظاہرے، فوج کا عوام پر تشدد، اقوامِ متحدہ نے تحقیقات کا مطالبہ کردیا

پراسیکیوٹر جنرل کا کہنا ہے کہ سابق صدر کے خلاف مالی بدعنوانی کے الزامات پر مقدمہ چلانے کے لیے تمام ثبوت اکھٹے کیے گئے ہیں۔ سوڈانی پراسیکیوٹر جنرل نے گذشتہ ماہ معزول صدر پر کالے دھن کو سفید کرنے اور دہشت گردی کے لیے فنڈنگ جاری کرنے کے الزامات کی تحقیقات کا بھی حکم دیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں