The news is by your side.

Advertisement

سابق خاتون اوّل باربرابش 92برس کی عمر میں انتقال کرگئیں

واشنگٹن: سابق امریکی صدور جارج ایچ ڈبلیو بش کی اہلیہ اور جارج ڈبلیو بش کی والدہ باربرا بش طویل علالت کے باعث 92 برس کی عمر میں انتقال کرگئی۔

تفصیلات کے مطابق امریکا کی سابق خاتون اوّل باربرا بش طویل علالت کے بعد 92 سال کی عمر میں انتقال کر گئیں۔ وہ امریکا پر طویل عرصے تک حکمرانی کرنے والے دو صدور سے تعلق رکھتی تھیں۔

باربرا بش کی اپنے خاوند جارج ایچ ڈبلیو بش اور بیٹے جارج ڈبلیو بش کے ساتھ کی گئی یاد گار تصویر

باربرا بش سنہ 1989 سے سنہ 1993 تک امریکا کے صدررہنے والے جارج ایچ ڈبلیو بش کی اہلیہ تھیں جبکہ ان کے صاحبزادے جارج ڈبلیو بش بھی سنہ 2000 میںامریکا کے صدر منتخب ہوئے۔ وہ دو مرتبہ اس عہدے پر فائز رہے۔

ان کے ایک اور صاحبزادے جیب بش سنہ 1999 سے 2007 تک امریکی ریاست فلوریڈا کے گورنر بھی رہے۔

سابق خاتون اوّل کی طبیعت ایک عرصے سے خراب تھی اور انہوں نے طویل علالت کے باعث علاج کروانے سے بھی انکار کردیا تھا۔

ان کے انتقال پر سابق امریکی صدر جارج ڈبلیو بش نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ’میں، لورا، باربرا اور جینا 92 سال کی عمر میں والدہ کے انتقال پر افسوسردہ ضرور ہیں، لیکن ہمارا دل مطمئن ہے، کیوں کہ ہماری والدہ کی روح کو سکون مل گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ’میں بہت خوش قسمت ہوں کہ باربرا میری والدہ ہیں، وہ دوسروں سے بالکل مختلف اور شاندار خاتون تھیں، ان کے سبب بے تحاشا افراد کی زندیگیوں میں ہنسی، تعلیم اور محبت آئی‘۔

ان کا کہنا تھا کہ ’میری والدہ باربرا نے اپنی آخری سانس تک مجھے مشغول اور خوش رکھا، ہمارا خاندان انہیں کبھی نہیں بھول سکتا، آپ لوگوں کی نیک خواہشات پر شکریہ ادا کرتا ہوں‘۔

دوسری جانب باربرا بش کے شوہر اور سابق امریکی صدر جارج ایچ ڈبلیو بش کے دفتر سے بیان جاری ہوا کہ ’باربرا نے خاندان کی خواندگی کے لیے لگاتار کوشش کی، جسے اہل خانہ خواندگی کے محرک کے طور پر یاد رکھیں گے‘۔

سابق خاتون اول باربرا سیاست کے روایتی کردار سے بہت آگے تھیں۔ انہوں نے باربرا بش فاؤنڈیشن قائم کی تھی، جس کا مقصد پسماندہ خاندانوں میں تعلیم کو فروغ دینا تھا۔

باربرا بش عوامی حقوق کی علمبردار تھیں اور اسقاط حمل کے معاملے پر اپنے خاوند کی ریپبلکن پارٹی کے حامیوں سے اختلاف رکھتی تھیں۔

باربرا بش کی زندی کی یادگار تصویر

سابق خاتون اول کے انتقال پر امریکا کے سیاسی و سماجی حلقوں سمیت پوری دنیا ان کی خدمات پر خراج عقیدت پیش کررہی ہے۔

امریکا کے موجودہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی وائٹ ہاوس سے جاری اپنے بیان میں کہا ہے کہ ’سابق خاتون اوّل کی خلوص کے ساتھ خاندان اور ملک کی خدمت کرنے پر ہمیشہ یاد رکھا جائے گا، ان کی ملک اور خاندان سے وفاداری بے مثال تھی‘۔

سابق امریکی صدر باراک اوبامہ اور مشعل اوبامہ نے باربرا بش کے انتقال پر کہا ہے کہ ’ان کی عاجزی اور سائستگی امریکی اقدار کی اعلیٰ مثال کو ظاہر کرتی ہے.‘

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’وہ بش خاندان میں ایک چٹان تھیں، جس نے خود کو عوام کی خدمات کے لیے وقف کیا ہوا تھا‘۔

ایک اور سابق امریکی صدر بل کلنٹن کا کہنا تھا کہ ’باربرا بش کا مقصد اپنے ملک، خاندان اور دوستوں کی مدد کرنا تھا، میں اور ہیلری ان کی اور صدر بش کی خوش اخلاقی کو کبھی نہیں بھلا سکتے‘۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں