The news is by your side.

Advertisement

بانی ایم کیوایم نے شاہد حامد کو قتل کرنے کا حکم دیا، قاتل کا اقبالی بیان

کراچی : سابق ایم ڈی کے ای ایس سی شاہد حامد کے قتل کے احکامات بانی ایم کیو ایم نے جاری کیے جس کی تعمیل میں ندیم نصرت نے صولت مرزا کو ٹاسک دیا.

تفصیلات کے مطابق سابق ایم ڈی کے ای ایس سی شاہد حامد قتل کیس میں اہم موڑ آگیا ہے جب کوٹری سے حراست میں لیے گئے قتل کے چوتھے ملزم محبوب نے دورانِ تفتیش ہوشربا انکشافات کیے.

گرفتار ملزم محبوب عرف غفران عرف اطہر نے ابتدائی تفتیش میں اپنے اقبالی بیان میں دیگر تین ساتھیوں کے مل کر جولائی 1997 میں ایم ڈی کے ای ایس سی شاہد حامد کو قتل کرنے کا اعتراف کرلیا ہے.

گرفتار منہاج قاضی کا ایم ڈی کے ای ایس سی شاہد حامد کے قتل کا اعتراف

ملزم محبوب نے اپنے اقبالی بیان میں انکشاف کیا کہ قتل کے احکامات بانی ایم کیوایم نے جاری کیے تھے جس پر عمل کرتے ہوئے ایم کیو ایم لندن کے کنونیر ندیم نصرت نے شاہد حامد کے قتل کا ٹاسک صولت مرزا کو دیا اور ملزم نے صولت مرزا، منہاج قاضی کے ہمراہ فائرنگ کر کے ایم ڈی کے ای ایس سی کو ہلاک کردیا تھا.

صولت مرزا کو پھانسی دیدی گئی

خیال رہے شاہد حامد قتل کیس کے مرکزی ملزم صولت مرزا کو 2015 میں پھانسی سی جا چکی ہے جب کہ دوسرے ملزم منہاج قاضی کو گزشتہ برس رنچھور لائن سے حراست میں لیا گیا تھا جب کہ تیسرے ملزم کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ طبعی موت مر چکا ہے اور چوتھا ملزم محبوب کوٹری سے گرفتار ہوئے.


اگرآپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اوراگرآپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس  وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں