فوکسی گاڑی کے نئے ماڈلز نہ بنانے کا اعلان -
The news is by your side.

Advertisement

فوکسی گاڑی کے نئے ماڈلز نہ بنانے کا اعلان

فوکسی نے 80 برس تک راج کیا اور ایسی تین نسلیں ہیں جنہوں نے یہ گاڑی استعمال کی

برلن: جرمنی کی موٹر کمپنی ووکس نے 80 برس تک استعمال ہونے والی پائیدار گاڑی ’فوکسی‘ کی پروڈکشن بند کرنے کا اعلان کردیا۔

تفصیلات کے مطابق سن 1930 میں متعارف کرائی جانے والی گاڑی فوکسی کی مارکیٹ میں کمزور پڑتی ساکھ کو مدنظر رکھتے ہوئے کمپنی نے 2019 سے مزید ماڈلز نہ بنانے کا اعلان کیا۔

برطانوی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق موٹر کمپنی ووکس ویگن کے سربراہ ہنرچ وائی بیکن نے اعلان کیا ہے کہ وہ سنہ 2019 میں اپنی 80 سال پرانی گاڑی بیٹل یعنی فوکسی کی پیداوار روک دیں گے۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’فوکسی کو تین نسلوں نے استعمال کیا اور یہ 8 دہائیوں یعنی 80 سال تک عوام کے ساتھ کسی نہ کسی طرح جڑی رہی مگر اب کمپنی کے حالات ایسے نہیں کہ اس کی مزید پیدوار کی جائے’۔

یہ پڑھیں: حکومتی اقدام، کروڑوں روپے مالیت کی گاڑیاں بلڈوز

ووکس ویگن کی جانب سے جاری اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ آئندہ برس سے فوکسی کی تیاری پر کام روک دیا جائے گا البتہ گاڑی کی باقاعدہ پروڈکشن دو جدید ماڈلز متعارف کرانے کے بعد بند ہوگی۔

ہنرچ وئی بیکن کا کہنا تھا کہ درحقیقت گاڑی کے ساتھ لوگوں کی جذباتی کیفیت وابستہ ہے اس لیے وہ اس کی بندش پر پریشان ضرور ہوں گے۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’فوکسی کی تیاری کا خیال نازی لیڈر ایڈولف ہٹلر نامی انجینئر نے پیش کیا جس کا مقصد یہ تھا کہ اس طرز کی گاڑیاں تیار کی جائیں جو ہر شخص خرید سکے‘۔

ہنرچ کا کہنا تھا کہ عصر حاضر میں مختلف کمپنیوں نے جدید گاڑیاں متعارف کروائیں جس کے باعث فوکسی کی دنیا بھر میں ہونے والی فروخت بہت زیادہ متاثر ہوئی، رواں برس صرف 11 ہزار 151 گاڑیاں فروخت ہوئی، کمپنی کا معاشی گراف ہرسال نیچے کی طرف آرہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: امریکا: اڑنے والی کم قیمت گاڑی متعارف

جرمنی کی کمپنی نے جدید فیچر شامل کر کے فوکسی کا الیکٹرانک ماڈل متعارف کرنے کا فیصلہ کیا تھا البتہ گزشتہ دنوں بورڈ آف ڈائریکٹرز کی مٹینگ میں پیداوار مکمل ختم ہونے پر اتفاق کیا گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں