The news is by your side.

Advertisement

گھر تک کتابیں مفت پہچانے کی مثالی کاوش

کوئٹہ : بلوچستان کے نوجوانوں نے علم دوستی کی شاندار مثال قائم کردی، یہ نوجوان خالی اسپتال کی عمارت میں لائبریری بناکر شہریوں میں بلامعاوضہ علم و آگہی پھیلانے کا مؤثر ذریعہ بن رہے ہیں۔

کوئٹہ کے علاقے سریاب روڈ کے رہائشی نوجوانوں نے بے نظیر اسپتال غوث آباد کی خالی عمارت میں ایک لائبریری قائم کی جہاں سے شہریوں کو مفت کتابیں فراہم کی جاتی ہیں۔

ان نوجوانوں نے علاقے کے لوگوں کو ان کی مطلوبہ کتابیں بلا معاوضہ فراہم کرنے کا اپنی مثال آپ سلسلہ شروع کیا ہے، یہی نہیں بلکہ وہ یہ کتابیں موٹر سائیکل کے ذریعے ان کے گھر تک بھی پہنچاتے ہیں۔

کوئٹہ سے اے آر وائی نیوز کے نمائندے منظور احمد سے گفتگو کرتے ہوئے لائبریری کے رۤضاکار طالب علم نوید احمد نے بتایا کہ ہم آپس میں چندہ کرتے ہیں اور موٹر سائیکل کے پیٹرول سمیت اپنی جیب خرچ سے تمام اخراجات اٹھاتے ہیں۔

اس قابل تقلید سلسلے کو شروع کرنے والے طالب علم کا نام امجد علی واصف ہے، ان کے ساتھ ان کے دیگر 10 دوست بھی شامل ہیں، انہوں نے اس پروگرام کا نام “ریڈر زون سریاب” رکھا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ ہمارے اس پروگرام کا مقصد ان لوگوں تک کتابوں کی فراہمی ہے جو لائبریری نہیں آسکتے، یا وہ طلباء و طالبات جو کتاب خریدنے کی سکت نہیں رکھتے۔ اب تک ہمارے نیٹ ورک میں 200تک ایسے لوگ ہیں جوباقاعدگی سے کتاب منگواتے ہیں۔

اس حوالے سے ریڈر زون سریاب کے سربراہ امجد علی واصف نے اے آر وائی نیوز کو بتایا کہ ہمارے پاس زیادہ تروہ لوگ آتے ہیں جو غریب ہوتے ہیں ان کا تعلق مزدور طبقے سے ہے، جن کے کام آکر ہمیں خوشی محسوس ہوتی ہے۔

سوشل میڈیا پر اس ریڈر زون کے پیجز بنائے گئے ہیں جس پر لوگ رابطہ کرکے کتابیں منگواتے ہیں اس کا ایک طریقہ کار ہے کہ 25روز میں کتاب ہر صورت واپس کرنا ہوتی ہے خلاف ورزی پر دوبارہ کتاب نہیں دی جاتی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں