The news is by your side.

Advertisement

حریت رہنماﺅں کا جدوجہد آزادی کشمیر جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ، کرفیو کی مذمت

سرینگر: مقبوضہ کشمیر میں کل جماعتی حریت کانفرنس کے رہنماﺅں نے پیر کو مسلسل 43 ویں روز بھی مقبوضہ علاقے میں کرفیو، موبائل اور انٹرنیٹ سروسز سمیت مواصلاتی پابندیاں جاری رہنے کی شدید مذمت کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق کل جماعتی حریت کانفرنس کے رہنماء بلال احمد صدیقی اور زمرودہ حبیب نے سرینگر میں جاری اپنے الگ الگ بیانات میں بھارت کی جارحیت اور نہتے کشمیریوں کے خلاف پیلٹ گنز اور آنسو گیس سمیت طاقت کے وحشیانہ استعمال کی شدید مذمت کرتے ہوئے عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ظلم و بربریت رکوانے کیلئے اقدامات کرے۔

انہوں نے کہا کہ مذہبی فرائض اور نماز جمعہ کی ادائیگی سے روکنا بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہے اور اقوام متحدہ کو مقبوضہ علاقے میں بھارتی ریاست دہشت گردی بند کرانے کیلئے بھارت پر دباﺅ بڑھانا چاہیے۔

بھارتی سپریم کورٹ کا مقبوضہ کشمیرمیں حالات ہرصورت معمول پرلانے کا حکم

حریت رہنماﺅں نے کرفیو اور پابندیوں کے دوران شہید ہونے والے کشمیریوں کو زبردست خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے حق خودارادیت کے حصول کی جدوجہد کو اس کے منطقی انجام تک جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا۔

ادھر کل جماعتی حریت کانفرنس آزاد کشمیر شاخ اور تحریک خواتین کشمیر کی رہنماء شمیمہ شال نے جنیوا میں اقوام متحدہ پراپنی متعلقہ قراردادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کے حل پر زور دیا ہے۔

انہوں نے اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کو مقبوضہ کشمیرکی ابتر صورتحال کا جائزہ لینے کیلئے اپنی ٹیم مقبوضہ وادی بھیجنے کا مطالبہ کیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں