The news is by your side.

Advertisement

خواتین مریضوں سے زیادتی کے جرم میں فرانسیسی ڈاکٹر کو 10 سال قید کی سزا

پیرس: فرانس کی ایک فوج داری عدالت نے گزشتہ برس اسپتال میں 32 خواتین مریضوں کو زیادتی کے جرم میں ایک مقامی ڈاکٹر کو دس سال قید کی سزا سنائی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق 32 خواتین مریضوں کی تصاویر بنانے اور انہیں زیادتی کا نشانہ بنانے والے ڈاکٹر ٹیبری ڈاساس کو دس سال قید کی سزا سنادی۔

ملزم کو دس سال قید کے ساتھ حیات طب کے پیشے پر پابندی اور مسلسل دس سال تک علاقے سے باہر نہ جانے کی سزا دی گئی ہے

سزا پانے والے 68 سالہ ڈاکٹر وسطی فرانس کے علاقے ارگان سور سلوڈر میں سابق سرکاری ڈاکٹر رہ چکا ہے، ان پر 32 خواتین کی آبرو ریزی کا الزام عائد کیا گیا ہے۔

ملزم ڈاکٹر پر خواتین کے طبی معائنے کے دوران ان کی تصاویر بنا کر ان کی پرائیویسی میں مداخلت کرنے کا الزام بھی عائد کیا گیا ہے۔

عدالت نے چار خواتین کی جانب سے زیادتی کے الزامات میں ملزم کو بری کردیا ہے، فرانسیسی پراسیکیوٹر جنرل نے ملزم کو 18 سال قید کی سفارش کی تھی۔

پراسیکیوٹر نے موقف اختیار کیا تھا کہ ملزم نے خواتین کی اجازت کے بغیر ان کی تصاویر بنائیں، تین ہفتے تک جاری رہنے والے ٹرائل کے دوران ملزم نے زیادتی کے الزام کی سختی سے تردید کی ہے۔

ملزم کو دس سال قید کے ساتھ حیات طب کے پیشے پر پابندی اور مسلسل دس سال تک علاقے سے باہر نہ جانے کی سزا دی گئی ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں