The news is by your side.

Advertisement

فرانس: بیٹی نے پارٹنر کے ساتھ مل کر خاندان کے افراد کے ٹکڑے ٹکڑے کر دیے، وجہ سامنے آ گئی

پیرس: مغربی فرانس کے شہر نانٹس میں ایک خاتون نے پارٹنر کے ساتھ مل کر سونے کے سکوں کی خاطر اپنے والدین اور بھائی بہن کو قتل کر کے ٹکڑے ٹکڑے کر دیا، بعد ازاں ٹکڑے بھی جلا دیے۔

تفصیلات کے مطابق فرانس میں گزشتہ روز ایک ایسے ملزم کے خلاف مقدمے کی سماعت شروع ہو گئی ہے، جس نے طلائی سکوں کے لیے اپنی پارٹنر کے ساتھ مل کر اس کے خاندان کے 4 افراد کو قتل کر دیا تھا۔

اس خوف ناک جرم کا ارتکاب فروری 2017 میں کیا گیا تھا، میڈیا میں یہ واقعہ ٹروڈیک افیئر کے نام سے مشہور ہوا، جس میں ملزم ہوبرٹ کاویسن نے اپنی پارٹنر لیڈیا ٹروڈیک کے ساتھ مل کر اس کے 49 سالہ والدین پاسکل ٹروڈیک اور بریجیٹ، 20 سالہ بھائی سباسٹین اور 18 سالہ بہن شارلٹ کو قتل کر دیا تھا۔

فرانسیسی شہری ہوبرٹ نے اعتراف جرم بھی کر لیا تھا جس پر اسے عمر قید کی سزا سنا کر جیل بھیج دیا گیا تھا، لیکن اب یہ مقدمہ پھر عدالت پہنچ گیا ہے، وکیل صفائی عدالت کو اس بات پر قائل کرنا چاہتا ہے کہ واقعے کے وقت قاتل نفسیاتی طور پر صحت مند نہیں تھا، تاکہ مجرم کو کم سے کم سزا دی جائے۔

سونے کے بہت سے سکوں کے لیے کیے گئے چار افراد کے قتل کا یہ واقعہ اس لیے بہت شہرت پا گیا تھا کہ ملزم اور اس کی شریک ملزمہ کے مطابق ٹروڈیک خاندان کے یہ چاروں ارکان اچانک لاپتا ہو گئے تھے، تاہم پولیس کو ہوبرٹ اور اس کی گرل فرینڈ لیڈیا کی رہائش کے باہر خون کے دھبے ملے تو انھیں گرفتار کر لیا گیا۔ جب کہ دیگر رشتہ داروں نے بھی ان کی طرف انگلیاں اٹھائیں، نیز ٹروڈیک خاندان کے گھر سے ان دونوں کے ڈی این اے کے ثبوت بھی ملے۔

رپورٹس کے مطابق لیڈیا کے والد کو ایک دوسرے فرانسیسی شہر میں اپنے ایک مکان کی تعمیر و مرمت کے دوران سونے کے بہت سارے سکے ملے تھے، اور انھوں نے اس خزانے میں سے لیڈیا کو حصہ دینے سے انکار کر دیا تھا، جس پر انھوں نے خاندان کو قتل کر کے سکے قبضے میں کرنے کا منصوبہ بنایا۔

دوران تفتیش ملزم نے اپنے جرم کا اعتراف کیا، اس نے پولیس کو بتایا کہ اس نے اپنی پارٹنر کے والدین اور ایک بھائی اور ایک بہن کو قتل کرنے کے بعد ان کی لاشوں کے ٹکڑے کر دیے تھے، لاشوں کے زیادہ تر ٹکڑے ایک اوون میں جلائے، باقی بریٹنی کے علاقے میں واقع زرعی فارم کے مختلف حصوں میں زمین میں دبا دیے۔

استغاثہ نے شریک ملزمہ لیڈیا ٹروڈیک کے لیے عدالت سے 3 سال قید اور 45 ہزار یورو جرمانے کا مطالبہ کیا ہے، اس پر الزام ہے کہ اس نے مقتولین کی لاشیں چھپانے میں ملزم کی مدد کی تھی۔

اس مقدمے میں عدالت اپنا فیصلہ تقریباﹰ 2 ہفتے بعد سنائے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں