The news is by your side.

Advertisement

فرانسیسی ملٹری انٹیلیجنس چیف برطرف

پیرس: فرانسیسی انٹیلیجنس چیف کو برطرف کر دیا گیا، وہ یوکرین پر روسی حملے سے قبل درست پیش گوئی نہیں کر سکے تھے۔

تفصیلات کے مطابق یوکرین کی جنگ میں ناکامی پر فرانس کے ملٹری انٹیلیجنس چیف جنرل ایرک وڈاؤڈ کو عہدے سے بر طرف کر دیا گیا، جنرل ایرک پر الزام ہے کہ روسی فوجی آپریشن سے قبل وہ درست پیش گوئی کرنے میں بھی ناکام رہے۔

ایک فوجی ذریعے نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر اے ایف پی کو بتایا کہ جنرل ایرک وڈاؤڈ، جنھوں نے 7 ماہ قبل ہی ڈائریکٹوریٹ آف ملٹری انٹیلیجنس (DRM) کی قیادت سنبھالی تھی، فوری طور پر اپنے عہدے سے مستعفی ہو رہے ہیں۔

مغربی میڈیا کے مطابق وزارت دفاع کی داخلی تحقیقات میں بھی جنرل ایرک پر ‘ناقص بریفنگ’ اور ‘مسائل پر عبور حاصل کرنے میں ناکامی’ پر تنقید کی گئی تھی۔

یورپ کو دی گئی روسی مہلت آج ختم، آگے کیا ہوگا؟

اس حوالے سے میڈیا میں سامنے آنے والی رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ امریکا نے بالکل درست اندازہ لگایا تھا کہ روس بڑے پیمانے پر یوکرین پر حملے کی منصوبہ بندی کر رہا ہے، جب کہ فرانس نے یہ نتیجہ اخذ کیا کہ اس کا کوئی امکان نہیں، فرانس کے فوجی سربراہ نے جنرل وڈاؤڈ کو اس کا ذمہ دار ٹھہرایا۔

واضح رہے کہ روس کا کہنا ہے کہ روس کے یوکرین میں جاری خصوصی آپریشن کے خلاف مغربی میڈیا میں جھوٹی اور گمراہ کن خبریں پھیلائی جا رہی ہیں، یوکرین میں روس اپنے کلیدی اہداف کو حاصل کر چکا ہے، جب کہ مغربی میڈیا روس کے یوکرین میں جاری آپریشن کو نامکمل ثابت کرنے کے لیے منفی رپورٹنگ کا سہارا لے رہا ہے۔

یوکرین کی جنگ کو 36 روز ہوگئے ہیں، روس کے صدر ولادیمیر پیوٹن نے 24 فروری کو یوکرین کے خلاف فوجی آپریشن کا فرمان جاری کیا تھا اور یوکرینی فوجیوں کو ہتھیار ڈالنے اور اپنے گھروں میں واپس جانے کی دعوی دی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں