The news is by your side.

Advertisement

‘2000 سے 2020 تک پورے براڈشیٹ معاملےکی تحقیقات ہوں گی’

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات شبلی فراز نے کہا ہے کہ براڈشیٹ معاملے پر ہمارا فرض بنتا ہے تمام کرداروں کو سامنےلائیں، انکوائری کمیٹی کامقصدہے پہلے قوم کو تو پتہ چلےکون سے کردار ملوث ہیں۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام پاور پلے میں گفتگو کرتے ہوئے شبلی فراز نے کہا کہ براڈشیٹ معاملےمیں پاکستان سے تعلق رکھنےوالےکرداربھی ہیں، کردارسامنےلانےکےبعدباقی قانونی کارروائی بھی کی جائےگی۔

شبلی فراز نے کہا کہ کیس ہم نےنہیں سابقہ حکومتوں نےخراب کیاہے، پہلےپیپلزپارٹی اورپھرن لیگ نےکیس کو خراب کیا جن لوگوں کیخلاف تحقیقات ہورہی تھیں وہ حکومت میں بیٹھ گئے، سابقہ حکومتوں میں براہ راست رابطےکرکے پیشکشیں کی گئیں۔

جسٹس (ر) عظمت سعید براڈشیٹ انکوائری کمیٹی کے سربراہ مقرر

انہوں نے کہا کہ 2000 سے لے کر 2020 تک پورے براڈشیٹ معاملےکی تحقیقات ہوں گی، کمیشن تحقیقات کرے گا کون لوگ تھے اورکن لوگوں نےمعاملےسےفائدہ اٹھایا،کون سےمواقع ہیں اورکن جگہوں پربراڈشیٹ کوفائدہ دیا گیا تحقیقات ہوں گی۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ بطورپاکستانی شہری ہمارادل روتاہےکہ کیسےلوگوں نےملک کاخزانہ لوٹا، انکوائری کمیٹی کسی پہلویاکسی شخص کونظراندازنہیں کرےگی، کڑیاں ملائیں گےتومعاملےمیں ملوث سب لوگ بےنقاب ہوجائیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں