کراچی: پولیس کی کارروائی، افغانستان کے نمبر سے تاوان مانگنے والے 3 اغوا کار گرفتار -
The news is by your side.

Advertisement

کراچی: پولیس کی کارروائی، افغانستان کے نمبر سے تاوان مانگنے والے 3 اغوا کار گرفتار

کراچی: سندھ پولیس نے شہر قائد میں سرگرم اغوا برائے تاوان میں ملوث تین مبینہ اغوا کاروں کو گرفتار کرلیا جو افغانستان کے نمبر سے کال کر کے تاوان کی رقم طلب کرتے تھے۔

تفصیلات کے مطابق اینٹی وائلنٹ کرائم سیل (اے وی سی سی نے) کراچی سے اغوا کیے جانے والے نوجوان عدیل کا کیس حل کرلیا جسے 6 فروری کو اغوا کر کے 21 مئی کو تاوان کی ادائیگی کے بعد رہا کیا گیا تھا۔

ڈی آئی جی سی آئی اے امین یوسفزئی نے بتایا کہ تین ملزمان نے نوجوان کو اغوا کر کے اہل خانہ سے ڈیڑھ کروڑ روپے تاوان مانگا اور اہل خانہ سے 1 کروڑ روپے میں معاملہ طے ہونے کے بعد اُسے رقم لے کر رہا کیا۔

ڈائریکٹر جنرل سی آئی اے کے مطابق ملزمان نے افغان نمبر سے سماجی رابطے کی ایپلیکشن کے ذریعے عدیل کے بھائی نبیل سے بذریعہ کال رابطہ کیا اور  اُس کی ویڈیو بھی واٹس ایپ پر بھیجی۔

مغوی نوجوان کے اہل خانہ نے اغوا کاروں سے معاملہ طے کیا جو ایک کروڑ ڈیڑھ لاکھ روپے میں طے پایا، عدیل کے بھائی نے رقم کراچی میں مختار نامی شخص کو دی جس کے بعد ملزمان نے مغوی کو 21 مئی کو  یونیورسٹی روڈ پر چھوڑا۔

امین یوسفزئی کے مطابق ملزمان نے ایک کروڑ روپے تاوان کے جبکہ ڈیڑھ لاکھ روپے رقم افغانستان منتقل کرنے کے لیے ادا کیے گئے، پولیس نے مذکورہ رقم افغانستان منتقلی سے قبل برآمد کرتے ہوئے تین ملزمان کو حراست میں لے لیا۔

انہوں نے بتایا کہ پولیس نے کارروائی کے دوران جن افراد کو گرفتار کیا اُن کی شناخت روح اللہ، مختار، نعیم کے ناموں سے ہوئی، ملزمان کے قبضے سے اسلحہ، گاڑی اور رقم بھی برآمد ہوئی۔

ڈی جی سی آئی اے کا کہنا تھا کہ ملزم نعیم نے دوران تفتیش پولیس اہلکار سمیت 7 افراد کے قتل اور اغوا کی وارداتوں کا اعتراف کیا جبکہ اُس کے دیگر ساتھی خیبرپختونخواہ میں آپریشن کے دوران مارے جاچکے جبکہ گروہ کے چار افراد مفرور ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں