لندن: نسل پرست گروہ کا خاتون سمیت شوہر اور بچے پر تشدد Gang of racist
The news is by your side.

Advertisement

لندن: نسل پرست گروہ کا خاتون سمیت شوہر اور بچے پر تشدد

لندن : برطانیہ میں نسل پرست گینگ نے ٹرین میں سفر کرتے ہوئے بچوں کی گاڑی پر بحث کے بعد مسافر کو اہلیہ اور بچے سمیت تشدد کا نشانہ بنایا اور خاتون کے لیے نازیبا الفاظ استعمال کیے۔

تفصیلات کے مطابق برطانیہ کے دارالحکومت لندن میں بچوں کی گاڑی پر بحث کے بعد نوجوانوں کے نسل پرست گینگ نے والدہ، سمیت باپ اور بچے کو تشدد کا نشانہ بنایا اور متاثرہ خاندان کے ساتھ نازیبا حرکات بھی کیں۔

برطانوی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ گینگ کے افراد نے والد پر بوتلیں ماریں اور لاتوں اور مکّوں کا آزادنہ استعمال کیا اور ساتھ ہی ساتھ خاتون کو نامناسب الفاظ سے مخاطب کرتے رہے۔

متاثرہ خاندان نے پولیس کو بتایا کہ بحث کے دوران ایک نوجوان بُرے تنائج کی دھمکیاں دے رہا تھا کہ اچانک دوسرے  نوجوان نے مجھ پر بوتلیں برسانہ شروع کردیں اور لاتوں گھوسوں سے بھی مارنا شروع کردیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ جائے وقوعہ پر نصب سی سی ٹی وی کیمروں نے متاثرہ خاندان پر تشدد کے مناظر قید کرلیے تھے، جس میں ملزمان کے چہرے واضح طور پر دیکھیں جاسکتے ہیں۔

برٹش ٹرانسپورٹ پولیس نے واقعے کا مقدمہ درج کرتے ہوئے مذکورہ گینگ کے افراد کی تلاش شروع کردی ہے۔


مزید پڑھیں : لندن:خواتین گینگ کا نسل پرستی کی بنیاد پرہسپانوی دوشیزہ پرتشدد


واضح رہے کہ اس قبل بھی برطانیہ کے نسل پرست گروہوں کی جانب سے شہریوں کو نشانہ بنایا جاتا رہا ہے۔

یاد رہے کہ 4 ماہ قبل برطانوی دارالحکومت لندن میں خواتین کے ایک نسل پرست گروہ نے دن دیہاڑے ٹرین میں سفر کرتے ہوئے 24 سالہ ہسپانوی لڑکی کو تعصب کی بنیاد پر تشدد کا نشانہ بنایا تھا۔

میٹروپولیٹن پولیس کے مطابق متاثرہ لڑکی ٹرین کے اندر اپنی ساتھی سے ہسپانوی زبان میں محوِ گفتگو تھی، کہ اچانک گینگ کی خواتین نے چلا کر ’انگلینڈ میں ہو، صرف انگلش بولو‘ کہتے ہوئے زدو کوب کرنا شروع کردیا تھا، تشدد کے نتیجے میں متاثرہ لڑکی کو سر اور چہرے پر شدید چوٹیں آئی تھیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں