The news is by your side.

Advertisement

گیٹ وک ایئرپورٹ: ڈرون سے ملنے والے فنگر پرنٹ کی مماثلت نہ ہوسکی

لندن : برطانیہ کے مصروف ترین انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر مشکوک پرواز کرنے والے ڈرونز سے ملنے والے فنگر پرنٹ کی پولیس ریکارڈ سے مماثلت نہ ہوسکی۔

تفصیلات ک مطابق برطانیہ کے دارالحکومت لندن کے گیٹ وک انٹر نیشنل ایئرپورٹ کے رن وے کے قریب دو ڈرونز کی پرواز کے باعث 36 گھنٹے مسلسل پروازوں کی آمد و رفت منسوخ رہی تھی، جس کی وجہ ڈیڑھ لاکھ کے قریب مسافروں کو پریشانی کا سامان کرنا پڑا تھا۔

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ گیٹ وک ایئرپورٹ کے قریب سے ٹوٹے ہوئے ڈرون سے ملنے والے انگلیوں کے نشانات اور پولیس ریکارڈ میں نشانات کی آپس میں مماثلت نہیں ہوسکی ہے۔

سسیکس پولیس نے نشانات میں مماثلت نہ ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ سیکیورٹی ادارے ٹوٹا ہوا ڈرون برآمد ہونے کے بعد ایئرپورٹ پر مشکوک ڈرونز کی پرواز کے کیس کو مزید آگے بڑھانے کی کوشش کررہے ہیں۔

برطانوی خر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ انگلیوں کے نشانات کو مشین کے ذریعے نیشنل ڈیٹا بیس میں تلاش کیا گیا لیکن ڈیٹا بیس سے بھی کوئی مماثلت نہیں ملی۔

پولیس ذرائع کے مطابق ’ڈرون سے ملنے والے انگلیوں کے نشانات ایسے شخص کے ہیں جس کا کوئی کرمنل ریکارڈ نہیں ہے‘۔

مقامی میڈیا کا کہنا ہے کہ فنگر پرنٹ میں مماثلت نہ ہونے کے باعث برطانوی پولیس کر پڑا دھچکا لگا کیوں پولیس کو نشانات کی مماثلت سے کیس میں اہم پیش رفت کی امید وابستہ تھی۔

مزید پڑھیں : لندن: ڈرون اڑانے کے الزام میں گرفتار جوڑے کو عدم شواہد پر رہا کردیا گیا

یاد رہے کہ سینتالیس سالہ پاؤل گئیت،57 سالہ ایلائنی کرک کو برطانوی پولیس نے شک کی بنیاد پر جمعے کی شب 10 بجے گرفتار کیا تھا جنہیں ثبوت کی عدم موجودگی کے باعث رہا کردیا گیا تھا۔

برطانوی پولیس نے گیٹ وک ایئرپورٹ کے قریب سے ایک ناکارہ ڈرون برآمد کرلیا ہے۔

مزید پڑھیں: گیٹ وک ایئرپورٹ پر مشکوک ڈرونز اڑانے والا جوڑا گرفتار

واضح رہے کہ گیٹ وک ایئرپورٹ پر پروازیں مسلسل 36 گھنٹے تک منسوخ رہی تھیں۔

مقامی خبر رساں ادارے کے مطابق مشکوک ڈرونز کو کنٹرول کرنے پولیس کی ناکامی کے بعد حکومت نے فوج کی خدمات حاصل کی تھیں۔

خیال رہے کہ ایئرپورٹ انتظامیہ نے گیٹ وک آنے والی پروازوں کا رخ ملک کے دوسرے ہوائی اڈوں کی جانب موڑ دیا تھا، جن میں لندن ہیتھرو، لوٹن، برمنگھم، گلاس گلو اور مانچیسٹر بھی شامل ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں