The news is by your side.

Advertisement

بھارتی ارب پتی کے فنڈز سے چلنے والی میانمار فوج کی کمپنی پر پابندی عائد

واشنگٹن: امریکا نے بھارتی ارب پتی سرمایہ کار کے فنڈز سے چلنے والی میانمار فوج کی کمپنی پر پابندی عائد کر دی۔

تفصیلات کے مطابق امریکا کی جانب سے میانمار فوج کی کمپنی پر پابندی لگا دی گئی، اس کمپنی میں بھارتی بزنس ٹائیکون گوتم اڈانی نے 52 ملین ڈالر فنڈنگ کی ہے۔

میانمار اکنامک کارپوریشن پر انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر عالمی پابندیاں ہیں، تاہم مغربی ممالک کے بعد اب امریکا نے بھی میانمار اکنامک کارپوریشن پر پابندیاں لگا دی ہیں۔

یاد رہے کہ آسٹریلین سینٹر فار انٹرنیشنل جسٹس، جسٹس فار میانمار نے بھارتی سرمایہ کار اور میانمار فوج کا گٹھ جوڑ بے نقاب کیا تھا، اس حوالے سے سامنے آنے والی رپورٹ میں گوتم اڈانی اور میانمار آرمی چیف کی تصاویر جاری کی گئی تھیں۔

بھارتی بزنس ٹائیکون گوتم اڈانی

یہ تہلکہ خیز تصاویر دونوں کے درمیان تحائف کے تبادلوں کی تھی، تاہم اڈانی گروپ نے حال ہی میں میانمار کی فوج کے ساتھ تعلقات کی تردید کی ہے.

امریکا نے میانمار سے تجارتی معاہدہ معطل کردیا

گوتم اڈانی 2003 سے بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے بھی قریبی ساتھی ہیں، اور 50 ارب ڈالر اثاثوں کے مالک گوتم اڈانی کو مودی کا راک فیلر کہا جاتا ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز جو بائیڈن انتظامیہ نے میانمار میں فوج کے اقتدار پر قبضے کے خلاف میانمار کے ساتھ تجارتی معاہدہ معطل کر دیا تھا، امریکی انتظامیہ کا کہنا تھا کہ اس اقدام کا مقصد میانمار کی فوج پر دباؤ بڑھانا ہے۔

میانمار میں انسانی حقوق کے ایک مقامی گروپ کے مطابق اقتدار پر فوج کے قبضے کے بعد سے پیر کے روز تک فورسز نے فائرنگ میں کم سے کم 510 افراد ہلاک کیے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں