The news is by your side.

Advertisement

ہم جنس پرست جج پیٹ بوٹے بھی امریکا کے صدراتی امیدوار بن گئے

واشنگٹن :امریکا کے صدارتی امیدوار پیٹ بوٹے جج نے دوسرے مرد سے شادی بھی کر رکھی ہے، ان کے صدارتی امیدواربننے کے اعلان پر امریکا میں بحث نئی بحث شروع ہوگئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکا میں اگلے برس کے صدارتی انتخابات کے لیے انتخابی مہم ابھی پارٹیوں کے اندر جاری ہے اس سلسلے میں مختلف ریاستوں میں پارٹی انتخابات کا سلسلہ اگلے برس کے اوائل میں شروع ہو گا۔

امریکا کی دو بڑی سیاسی جماعتوں میں سے ایک ڈیموکریٹک پارٹی کی جانب سے صدارتی الیکشن کا امیدوار بننے والے دس امیدواروں کی فہرست میں ایک نام پیٹ بوٹے جج کا ہے یہ بنیادی طور پر ہم جنس پسند ہے اور اس نے ایک دوسرے مرد چیسٹن بوٹے جج سے شادی بھی رچا رکھی ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ڈیموکریٹک پارٹی سے صدارتی امیدوار بننے کے اعلان کے بعد سے یہ بحث شروع ہے کہ کیا امریکی قوم اس کے لیے تیار ہے کہ کوئی ہم جنس پسند ان کے ملک امریکا کا صدر بن جائے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ سینتیس سالہ پیٹ بوٹے جج کی اہلیت کو انڈیانا ریاست کے شہر ساتھ بینڈ کے میئر کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔

بطور میئرانہوں نے اس شہر میں عوامی مقبولیت حاصل کی اور شہری ترقی کے لیے اپنی بھرپور کوششیں جاری رکھیں، جنہیں سراہا بھی گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ان کے پروفائل کے تناظر میں ان کے صدارتی امیدوار بننے کے حوالے سے عام امریکی شہریوں میں یہ بحث شدت اختیار کر چکی ہے کہ آیا ایک مخصوص جنسی رویے (ہم جنس پسندی)کا حامل شخص امریکا کے سب سے اہم منصب کا اہل ہو سکتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں