جارج بش، مشل اوبامہ کو ٹافیاں دینے کی وجہ سے میڈیا کی توجہ کا مرکز بن گئے bush،michelle
The news is by your side.

Advertisement

سینیٹر مک کین کی آخری رسومات میں جارج بش “ٹافی والے” بن گئے!

افسردہ ماحول میں جارج بش اور مشعل اوباما سب کی توجہ کا مرکز بنے رہے

واشنگٹن : سینیٹر جان مک کین کی آخری رسومات کے افسردہ ماحول میں سابق صدر جارج بش اور  مشعل اوباما ایک دوسرے کو ٹافیاں دینے کی وجہ سے انٹرنیٹ صارفین کی توجہ کا مرکز بنے ہوئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق امریکا کے سابق سینیٹر جان مک کین کی آخری رسومات امریکا کے دارالحکومت واشنگٹن میں ادا کی گئیں، جس میں امریکا کے دو سابق صدور جارج ڈبلیو بش اور باراک اوباما نے اپنی اپنی اہلیہ کے ہمراہ شرکت کی تھی۔

جان مک کین کے آخری رسومات کے افسردہ ماحول میں اس وقت ایک عجیب منظر دیکھنے میں آیا، جب جارج ڈبلیو بش نے اپنی اہلیہ لورا بش کی جانب سے دی جانے والی ٹافیاں مشعل اوباما کو  تھمائیں۔

اس منظر کو کیمروں کی آنکھ نے محفوظ کرلیا، جس کے بعد مذکورہ شخصیات سوشل میڈیا صارفین کی توجہ کا مرکز بنے ہوئے ہیں۔

سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے جارج بش اور مشعل اوبامہ کی ویڈیو پر دلچسپ تبصرے کیے جارہے ہیں۔

امریکی خبر رساں ادارے ’بارسٹول نیوز نیٹ ورک‘ نے ٹویٹ کیا کہ سابق امریکی صدر جارج ڈبلیو بش ’کینڈی مین‘ ہیں۔

ٹویٹر استعمال کرنے والے ایک صارف نے لکھا کہ ’وہ دوست جس نے سب کے لیے ویڈیو میں مٹھاس بھر دی، جس کے باعث جارج بش اور مشعل اوباما کی اچھی دوستی کی مزید تصدیق ہوگئی‘۔

ایک ٹویٹر صارف نے تبصرہ کیا کہ ’لورا بش، صدر بش اور مشعل اوباما کا ایک دوسرے کو ٹافیاں دینا سنہ 2018 کی سب سے بڑی سرخی ہے، کتنا خوبصورت لمحہ تھا ان لوگوں کے لیے جن کے آئیڈیل مختلف ہیں مگر وہ پھر بھی دوست ہیں‘ آخر میں تحریر کیا کہ ’لورا بش آپ کا شکریہ کہ آپ تیاری کے ساتھ آئیں‘۔

ایک اور سوشل میڈیا صارف نے کہا کہ ’مجھے بش اور مشعل اوباما کی دوستی بہت اچھی لگتی ہے، چاہے وہ ایک دوسرے کو ٹافیاں دینا ہوں، دیکھ کر بہت خوشی ہوئی‘۔

خیال رہے کہ سینیٹر جان مک کین دماغ میں رسولی کے باعث ایک ہفتہ قبل 81 برس کی عمر میں انتقال کرگئے تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں