The news is by your side.

Advertisement

جرمن حکومت کا پراپرٹی کمپنیوں کے ملکیتی مکان ضبط کرنے سے انکار

برلن: جرمن چانسلر انجیلا میرکل نے پراپرٹی کی بڑی کمپنیوں کے ملکیتی مکانات ضبط کیے جانے کے مطالبوں کو مسترد کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق جرمنی کی مخلوط حکومت میں شامل ملک کی دوسری بڑی جماعت ایس پی ڈی نے بھی چانسلر میرکل کے موقف کی تائید کی ہے۔

جرمن دارالحکومت برلن کے ہزاروں شہریوں نے شہر میں زیادہ کرائے کے سبب احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے، مظاہرین کا ایک اہم مطالبہ یہ بھی ہے کہ پراپرٹی کے بڑے اداروں کی ملکیت ڈھائی لاکھ مکانوں کو ضبط کر کے شہری حکومت کی تحویل میں دیا جائے۔

چانسلر میرکل کے ترجمان اسٹیفن زائبرٹ کا کہنا تھا کہ چانسلر میرکل کی رائے میں مکانوں کو ضبط کرنا اس مسئلے کا حل نہیں ہے،

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق پر مظاہرین کا کہنا تھا کہ شہریوں کو کرائے میں اضافہ کی وجہ سے ان کے گھروں سے باہر نکالا جا رہا ہے جبکہ سر چھپانے کی جگہ شہریوں کا بنیادی حق ہے۔

خیال رہے کہ گزشتہ برس فرانس کی یلو ویسٹ تحریک نے دیگر یورپی مماک کی طرح جرمنی کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا تھا، جرمنی کے شہر میونخ میں بھی زرد جیکٹ پہنے سیکڑوں مظاہرین نے احتجاج کیا تھا

فرانس کی ’یلو ویسٹ تحریک‘ جرمنی پہنچ گئی، احتجاجی مظاہرے شروع

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ میونخ میں نکالی گئی ریلی کے شرکاء نے ہاتھوں میں جرمن اور فرانسیسی پرچم اٹھا رکھے تھے جببکہ اس ریلی کا مقصد جرمنی میں بڑھی ہوئی سماجی تفریق کے معاملے کو اجاگر کرنا تھا۔

برلن : مکانات کی کمی اور کرایوں میں اضافے کے خلاف عوام سراپا احتجاج

گزشتہ برس احتجاج کرنے والے مظاہرین کا کہنا تھا کہ جرمنی میں گھروں کے کرایوں میں بے انتہا اضافہ ہوچکا ہے جس کم آمدنی والے افراد کےلیے ادا ناگزیر ہوچکا ہے لہذا لوگوں کو اپنے حقوق کےلیے سڑکوں پر آنا چاہیے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں