The news is by your side.

Advertisement

جرمنی نے 69 تارکین وطن کو واپس افغانستان پہنچا دیا

برلن : جرمن حکام نے گذشتہ روز پناہ کی درخواستیں مسترد ہونے والے 69 افغان تارکین وطن کو خصوصی طیارے کے ذریے واپس افغانستان پہنچا دیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق جرمنی نے افغان مہاجرین کی بڑھتی ہوئی تعداد کے پیش نظر 69 تارکین وطن کی جرمنی میں پناہ کی درخواستیں مسترد کیے جانے کے بعد گذشتہ روز خصوصی طیارے کے ذریعے واپس افغانستان پہنچا دیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ جرمن شہر میونخ سے افغان مہاجرین کا 69 افراد پر مشتمل سب سے بڑا قافلہ 4 جولائی کو خصوصی طیارے کے ذریعے افغانستان کے دارالحکومت کابل پہنچ گیا ہے۔

جرمنی خبر رساں اداروں کا کہنا ہے کہ جرمنی کی موجودہ حکومت تارکین وطن کے بحران کا شکار ہے، اس لیے جن مہاجرین کی جرمنی میں پناہ کی درخواستیں رد ہوچکی ہیں انہیں واپس آبائی وطن بھیجنے میں تیزی لارہی ہے۔

جرمن میڈیا کے مطابق واپس افغانستان بھیجے گئے 69 مہاجرین میں سے 51 تارکین وطن جرمنی کے صوبے باویریا میں مقیم تھے، باویریا کے وزیر داخلہ وفاقی حکومت کے افغان مہاجرین کو واپس لوٹانے کے فیصلے کو خوب سراہا ہے۔

خیال رہے کہ ماضی میں جرمن حکومت صرف تارکین وطن کو ملک بدر کرتی تھی جو جرمنی میں کسی جرم کے مرتکب ہوتے تھے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق دسمبر 2016 کے بعد افغان شہریوں کا سب سے بڑا گروپ ہے جسے بدھ کے روز افغانستان پہنچایا گیا ہے۔

جرمن حکام کی جانب سے سنہ 2016 میں افغان مہاجرین کی اجتماعی ملک بدری کے سلسلے میں برائے راست پروازوں کا سلسلہ شروع کیا تھا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ دسمبر 2016 سے اب تک واپس افغانستان بھیجے جانے والے افغان مہاجرین کی تعداد 300 سے زائد ہوگئی ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں