The news is by your side.

Advertisement

گھوسٹ ملازمین اب نہیں بچیں گے! محکمہ بلدیات نے فیصلہ کرلیا

کراچی : محکمہ بلدیات سندھ نے کے ایم سی سمیت دیگر بلدیاتی اداروں میں موجود گھوسٹ ملازمین کیخلاف کارروائی کیلئے ملازمین کی اسکروٹنی کا فیصلہ کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق محکمہ بلدیات سندھ نے کراچی میونسپلٹی سمیت دیگر بلدیاتی اداروں میں دو ہزار دس سے اب تک بھرتی ہونے والے ملازمین کی اسکروٹنی کا فیصلہ کیا ہے،

محکمہ بلدیات کی جانب سے 24 نونمبر کو گھوسٹ ملازمین کی تفصیلات طلب کی گئی تھیں،تاہم بلدیاتی ادارے تفصیلات جمع کرانے میں ناکام رہے تھے جس کے باعث محکمہ بلدیات سندھ نے بلدیاتی اداروں کو ایک اور خط ارسال کیا ہے۔

خط تمام میوسپل اداروں کے ایڈمنسٹریٹرز ،کے ایم سی، ڈی ایم سیز ،ضلع کاونسلز، میونسپل کمیٹیز، ٹاون کمیٹیز، یونین کاونسلز اور یونین کمیٹیز کو ارسال کیا گیا ہے، جس میں 2010 سے بھرتی ہونے والے ملازمین کا مکمل سروس ریکارڈ طلب کیا ہے۔

محکمے نے بلدیاتی اداروں کو تین روز میں سروس ریکارڈ فراہم کرنے کی ہدایت کی ہے۔

محکمہ بلدیات سندھ کا کہنا ہے کہ 2010 سے مبینہ غیر قانونی جعلی بھرتیوں کے انکشاف کے باعث تحقیقات کا آغاز کیا گیا۔

محکمہ بلدیات سندھ نے گھوسٹ ملازمین اور جعلی بھرتی پر تنخواہیں حاصل کرنے والوں سے نجات کیلئے ملازمین کو ڈائریکٹ بینک کے ذریعے تنخواہیں ادا نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں