The news is by your side.

’یوروبانڈز اور کمرشل بینکوں سے قرض معاف نہیں کرایا جا رہا‘

وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کا کہنا ہے کہ یوروبانڈز کے قرض دہندگان اور کمرشل بینکوں سے قرض معاف نہیں کرایا جا رہا۔

ٹوئٹر پر جاری بیان میں وزیر خزانہ نے کہا کہ پاکستان کو درپیش موسمیاتی آفات کے باعث مشکلات کا سامنا ہے پیرس کلب کےقرض دہندگان سے باہمی بنیادوں پر قرض معاف کرایا جائے گا۔

وزیرخزانہ نے کہا کہ یورو بانڈز کے قرض دہندگان اور کمرشل بینکوں سےقرض معاف نہیں کرایا جا رہا کمرشل بینکوں سےقرض معاف کرانےکی ضرورت نہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ دسمبر تک ایک ارب ڈالرز کے بانڈز واجب الادا ہیں جس کی واپسی مقررہ وقت پرکی جائےگی ہم اب تک اپنے تمام کمرشل قرضوں کی ادائیگی کرتےرہےہیں اور قرضوں کی ادائیگی آئندہ بھی جاری رہےگی۔

مفتاح اسماعیل کا کہنا تھا کہ 2051 تک پاکستان یورو بانڈز کا قرض 8 ارب ڈالرز ہے قرض کاایک بڑا حصہ دوست ممالک کا ہے دوست ممالک نےقرض ادائیگیوں کوری رول کرنےکی یقین دہائی کرائی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں