The news is by your side.

Advertisement

چترال میں طلب سے زائد بجلی باوجود طویل لوڈشیڈنگ کا انکشاف

چترال: گولن پن بجلی گھر کے افتتاح کے بعد 35 میگاواٹ بجلی پیدا ہونے کے باوجود علاقے مین مستقل پانچ گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ جاری ہے، پورے چترال میں بجلی کی طلب کل 17 میگا واٹ ہے۔

تفصیلات کے مطابق چترال کے شہری  گزشتہ دنوں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے ہاتھوں گولن پن بجلی گھر کے افتتاح اور اب لوڈ شیڈنگ نہ ہونے کے اعلان کے باوجود لوڈ شیڈنگ کی اذیت  جھیلنے پر سراپا احتجاج ہیں۔

وزیر اعظم نے 107 میگاواٹ کے بجلی گھر کے فیز ون کا افتتاح کرتے ہوئے اعلان کیا تھا کہ یہ یہ پلانٹ 35 میگا واٹ بجلی پیدا کررہا ہے اور اب چترال میں لوڈ شیڈنگ نہیں ہوگی، اس کے باوجودپشاور الیکٹریسٹی سپلائی کمپنی (پیسکو) اور پشاور ڈسٹری بیوشن سنٹر (پی ڈی سی) نے وزیر اعظم کے اعلان کی دھجیاں اڑا دی۔

بلا سبب لوڈ شیڈنگ کے خلاف چترال کی سول سوسائٹی ، وکلا اور سیاسی جماعتوں کے نمائندوں نے پیسکو کے خلاف احتجاجی ریلی نکالی ، جس سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ وزیر اعظم نے گولین پن بجلی گھر کے افتتاح کے موقع پر اعلان اور وعدہ کیا تھا کہ اب چترال میں لاؤڈ شیڈنگ نہیں ہوگی مگر پیسکو کا عملہ جان بوجھ کر لوڈ شیڈنگ کر رہا ہے۔ انہو ں نے کہا کہ جب ہم گولن گول پاؤر ہاؤس کے پراجیکٹ ڈائریکٹر سے پوچھتے ہیں تو ان کاجواب یہی ہوتا ہے کہ ان کا بجلی گھر ایک سیکنڈ کیلئے بھی بند نہیں ہوتا بلکہ ہم پیسکو کے سب ڈویژنل آفیسر سے بار بار یہ کہتے ہیں کہ ہماری بجلی مصرف سے زیادہ ہے اس پر مزید 8 میگا واٹ کا لوڈ ڈالو مگر وہ نہیں مانتے ، اگر پورے چترال میں بھی تمام صارفین بیک وقت بجلی استعمال کریں تب بھی اس  بجلی گھر میں  علاقے کی ضرورت سے زیادہ بجلی  پیدا ہوتی ہے۔

اس سلسلسے میں پیسکو کے  ایس ڈی او فضل حسین سے جب رابطہ کرکے پوچھا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ ہماری طرف سے بجلی بند کرنے کا کوئی پرمٹ بھی نہیں ہے نہ کوئی ہدایت ہے ،یہ گرڈ اسٹیشن والے بند کرتے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ گرڈ اسٹیشن میں ایک نان ٹیکنیکل بندے کو انچارچ بنایا ہوا ہے جب اس سے پوچھتے ہیں کہ بجلی کیوں بند کرتے ہو توجواب ہوتا ہے کہ ان کو اوپریعنی پشاور ڈسٹری بیوشن سنٹر سے حکم ہے کہ  روزانہ پانچ گھنٹے لاؤڈ شیڈنگ کیاکریں۔

مقررین نے وزیر اعظم ، چیرمین واپڈا اور چیف ایگزیکٹیو پیسکو کو خبردار کیا کہ چترال میں وافر مقدار میں بجلی پیدا ہونے کے باوجود بلا جواز لاؤڈ شیڈنگ کا سلسلہ بند کیا جائے ورنہ چترال کے وکلاء اور سیاست داں پیسکو کے دفتر اور گرڈ سٹیشن کو تالہ لگانے پر مجبور ہوں گے۔ مقررین نے تین دن کا ڈیڈ لائن دیتے ہوئے متنبہ کیا کہ اگر تین دن کے اندر یہ مسئلہ حل نہیں ہوا تو وہ ایک بار پھر سڑکوں پر نکل آئیں گے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں