The news is by your side.

Advertisement

سونے کی قیمتوں میں کمی، چاندی کے بھاؤ بڑھ گئے

کراچی: عالمی منڈی میں سونے کی قیمتوں میں 4 ڈالر فی اونس اضافے کے باوجود مقامی مارکیٹ میں فی تولہ سونے کی قیمت 2 سو روپے کم ہو کر 58ہزار 8 سو پچاس روپے تک پہنچ گئی۔

تفصیلات کے مطابق عالمی منڈی میں سونے کی قیمتوں میں 4 ڈالر اضافہ ہوا جس کے بعد قیمتیں 1329 ڈالر پر پہنچی تاہم اس کا اثر مقامی مارکیٹوں پر نہیں پڑا اور  صرافہ بازاروں میں فی تولہ سونے کی قیمت 200 روپے کم ہوئی۔

جیولرز ایسوسی ایشن کے مطابق عالمی منڈی میں سونا 4 ڈالر مہنگا ہوا تاہم نئی قیمتوں کا اثر مقامی مارکیٹوں پر نہیں پڑا اور سونے و چاندی کی قیمتیں اضافے کے بجائے کمی کی طرف گئیں۔

سونے کے تاجروں کے مطابق صرافہ بازاروں میں پرائس ایڈجسٹمنٹ کے باعث فی تولہ سونے کی قیمت میں 200 روپے کمی ہوئی جس کے بعد نئی قیمتیں 58 ہزار 850 روپے تک پہنچی جبکہ دس گرام سونے کی قیمت 172 روپے گھٹنے کے بعد 42 ہزار 442 روپے تک پہنچی۔

مزید پڑھیں: سونے کی قیمتیں ساڑھے تین سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئیں

دوسری جانب عالمی مارکیٹ میں چاندی کی قیمتیں بڑھنے کا اثر مقامی بازاروں تک پہنچا جس کے بعد 10 روپے فی تولہ اضافے کے بعد 770 روپے اور دس گرام گرام کی قیمت 8 روپے 58 پیسے اضافے کے بعد 660 روپے تک پہنچی۔

سونے کے تاجروں کے مطابق کراچی، حیدر آباد، سکھر، ملتان، فیصل آباد، لاہور، اسلام آباد، راولپنڈی، پشاور اور کوئٹہ کی صرافہ مارکیٹوں میں سونا اور چاندی کی خرید و فروخت کاروباری ہفتے کے دوسرے یعنی منگل کے روز نئے داموں کے ساتھ ہوئی۔

قبل ازیں رواں برس مارچ میں عالمی اور مقامی مارکیٹ میں سونے کی قیمتوں میں 700 روپے اضافہ ہوا جس کے بعد فی تولہ سونے کی قیمت 58 ہزار 2 سو روپے تک پہنچ گئی تھی جو ساڑھے چار سال کی ریکارڈ سطح تھی۔

یہ بھی پڑھیں: سونے کی قیمتیں چار سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئیں

اس سے قبل رواں برس جنوری میں عالمی اور مقامی مارکیٹ میں سونے کی قیمتوں میں اضافہ ہوا جس کے بعد فی تولہ سونے کی قیمت 300 روپے اضافے کے بعد 57 ہزار 900 کی ریکارڈ سطح پر پہنچ گئیں تھیں۔

عالمی منڈی میں سونے کی قیمت میں اضافہ ہوا تھا جس کے بعد قیمتیں ساڑھے چار سال کی ریکارڈ سطح پر پہنچ گئیں تھیں اور ایشیائی منڈیوں میں قیمتوں میں 300 روپے کا اضافہ ہوا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں