The news is by your side.

Advertisement

وائس اور ویڈیو کالز کے لیے گوگل نے نئی ایپ کا اعلان کر دیا

گوگل وائس اور ویڈیو کالز کے لیے Meet اور Duo کو ایک ہی ایپ میں ملانے جا رہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق گوگل نے گزشتہ روز اعلان کیا ہے کہ وہ اپنی 2 ویڈیو کالنگ ایپس Duo اور Meet کو اب ایک ہی ایپ میں یک جا کرنے جا رہا ہے۔

گوگل کا کہنا ہے کہ بہت جلد صارفین کو ایک ہی گوگل میٹ دستیاب ہوگا، اور امید ظاہر کی ہے کہ یہ واحد کالنگ ایپ ہوگی جو صارفین کی زندگی کا ناگزیر حصہ بن جائے گی۔

گوگل نے یہ امید بھی ظاہر کی ہے کہ ان دونوں ایپس کو ملانے سے جدید مواصلاتی ٹولز کے کئی مسائل حل ہوں گے۔

گوگل ورک پلیس کے سربراہ حاویر سولٹیرو نے کہا کہ یہ سمجھنا بہت اہم ہے کہ لوگ کس ٹول کو استعمال کرنے جا رہے ہیں، کس مقصد کے لیے، اور کن حالات میں اس کا انتخاب کرتے ہی، ہماری ڈیجیٹل زندگی لاکھوں مختلف چیٹ ایپس سے بھری ہوئی ہے، ان میں سے کسی کا مقصد کچھ ہے اور کسی کا کچھ، چند کام کے لیے اور کچھ ذاتی مقاصد کے لیے ہم استعمال کرتے ہیں۔

اب گوگل کا ارادہ ہے کہ ان سب کو اکٹھا کرنے کے لیے جی میل ایڈریس اور فون نمبر استعمال کیا جائے، سولٹیرو نے کہا کہ اب اس طریقے سے آپ تک پہنچنے کے قابل ہونا واقعی اہم بات ہے، اور پھر یہ ایپ آپ کو یہ فیصلہ کرنے کی اجازت بھی دے گی کہ آیا آپ تک پہنچنا ہے یا نہیں۔

سولٹیرو نے گوگل میں اپنے زیادہ تر دور میں ‘اس رسائی’ کے خیال کو بہت فروغ دیا ہے، جس کی وجہ سے گوگل نے میٹ اینڈ چیٹ کو اپنی دیگر کئی سروسز میں ضم کیا۔

تاہم ناقدین کا کہنا ہے کہ یہ ٹھیک تو ہے لیکن اس کی وجہ سے گوگل سروسز بے ترتیب اور پیچیدہ ہو گئی ہیں، جلد بازی میں چیزیں ایک دوسرے کے ساتھ ملانے سے مسائل پیدا ہوتے ہیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ چند سالوں میں Meet ہر قسم کی میٹنگز اور گروپ چیٹس کے لیے ایک طاقت ور پلیٹ فارم بن گیا ہے، جب کہ Duo ایک میسجنگ ایپ کے طور پر استعمال ہوتا رہا ہے۔

اب گوگل نے وعدہ کیا ہے کہ وہ ڈیو کے تمام فیچرز کو میٹ میں لے کر آ رہا ہے، جو دونوں کا ایک بہترین کمبنیشن ہوگا۔

تاہم فی الوقت یہ نہیں کہا جا سکتا ہے کہ Duo کا کیا بنے گا، کیا اسے ہمیشہ کے لیے ختم کر دیا جائے گا؟ یہ ایپ گوگل نے 2016 میں لانچ کی تھی، تاکہ ون ٹو ون ویڈیو کالز آسان ہوں، اس ایپ میں ایسی کئی مفید چیزیں ہیں جو Meet میں نہیں ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں